2

ارطغرل غازی دیکھنے کا شکریہ، سلیمان شاہ نے پاکستانی جھنڈا شیئر کر دیا

اسلام آباد(نیو زڈیسک)پاکستان میں نشر ہونے والے ترک ڈرامے ’ارطغرل غازی‘ میں قائی قبیلے کے سردار سلیمان شاہ کا کردار ادا کرنے والے ’سردار گوکخان‘ نے بھی دیگر اداکاراؤں کی طرح پاکستان آنے کی خواہش ظاہر کر دی ہے۔تفصیلات کے مطابق شہرہ آفاق ترک ڈرامے ارطغرل غازی کی مقبولیت پاکستان میں مسلسل بڑھ رہی ہے اور اس میں کام کرنے والے اداکاروں کے پاکستانی مداحوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔ ڈرامے میں ارطغرل غازی کا کردار 41 سالہ انجین التان دوزیتان نے نبھایا ہے جب کہ ان کی بیوی حلیمہ سلطان کا کردار 28 سالہ اسرا بیلگیج نے ادا کیا ہے۔دونوں اداکاروں اور خاص طور پر حلیمہ سلطان کی پاکستان میں بے پناہ مقبولیت ہے اور لوگوں نے سوشل میڈیا پر فالو کرنے سمیت ان سے محبت کا اظہار کرنا بھی شروع کیا اور بتایا کہ کس طرح پاکستانی مداح انہیں چاہنے لگے ہیں۔ ڈرامہ مداحوں کی جانب سے تین ہفتوں میں حلیمہ سلطان یعنی اسرا بیلگیج کے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر ان کی تعریف میں کمنٹس کیے گئے ہیں اور لوگ ان سے ملنے اور انہیں پاکستان آنے کی دعوت دیتے دکھائی دیتے ہیں۔سوشل میڈیا کی مشہور ویب سائٹ انسٹاگرام پر سردار گوکخان نے پاکستانیوں سے اپنی محبت کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان کے سبز ہلالی پرچم کی تصویر شیئر کی۔شیئر تصویر کے ساتھ سردار گوکخان نے ’ارطغرل غازی‘ دیکھنے اور ڈرامے کے تمام کرداروں کو سراہنے پر تمام پاکستانیوں کا شکریہ ادا کیا اور اپنے میں جلد پاکستان آنے کی خواہش بھی ظاہر کی۔واضح رہے کہ پاکستان میں ترک ڈرامہ سیریل دیریلش ارطغرل، جسے ارطغرل غازی بھی کہا جاتا ہے، کو پاکستانی بہت پسند کر رہے ہیں، پی ٹی وی پر نشر ہونے والے ترک ڈرامے نے ایک نیا ریکارڈ بنا دیا ہے۔اس سے قبل ’ارطغرل‘ کا کردار ادا کرنے والے ا التان دوزیتان کا کہنا تھا کہ ہمیں دیکھنے کا شکریہ، مجھے پاکستان سے پیار ہے۔ایک مداح نے دورہ پاکستان کی دعوت دی تو ’ارطغرل غازی‘ کا کردار ادا کرنے والے اداکار کا کہنا تھا کہ میں جلد پاکستان کا دورہ کروںگا اور آپ لوگوں سے ملوں گا۔اس سے قبل ارطغرل غازی ڈرامہ کی اداکارہ ’حلیمہ سلطان‘ کا بھی کہنا تھا کہ میں پاکستان میں سب سے ملنے کے لیے پر جوش ہوں۔اداکارہ اسراء بلجیک (حلیمہ سلطان) نے خواہش کا اظہار سماجی رابطوں کی مشہور ویب سائٹ انسٹاگرام پر اپنے پاکستانی مداح کی تعریف کے جواب میں کیا۔اسراء بلجیک نے اس محبت پیغام پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میں پاکستانیوں کی محبت کا تہہ دل سے شکرگزار ہوں، میں دورہ پاکستان اور آپ لوگوں سے ملاقات کیلئے بہت پُرجوش ہوں، اپنا بے حد خیال رکھیے۔واضح رہے کہ ترک ڈرامے ارطغرل غازی میں تورگت الپ کا کردار ادا کرنیوالے جنگیز جوشقون نے بھی ’ارطغرل‘ اور ’حلیمہ سلطان‘ سمیت دیگر اداکاراؤں کی طرح پاکستان آنے کی خواہش ظاہر کی ہے۔انسٹاگرام پر سٹوری پوسٹ کرتے ہوئے انہوں نے پاکستانیوں کی جانب سے ستائش پر شکریہ ادا کرتے ہوئے لکھا کہ آپ سب کی محبت پر شکریہ، مجھے توقع ہے کہ ایک دن میں پاکستان آؤں گا، جب تک محفوظ اور صحت مند رہیں۔اس سے قبل ڈرامے میں اہم کردار ادا کرنے والے 2 اداکاروں نے بھی پاکستان آنے کی خواہش کا اظہار کیا تھا ۔ ان میں سے ایک دوآن بے (روشان) کا کردار ادا کرنے والے جاوید چتین گونر اور اصلحان خاتون کا کردار ادا گلثوم علی شامل ہیں۔جاوید چتین گونر کا کہنا تھا کہ وہ پاکستان سے ملنے والی محبت کے مشکور ہیں اور اس بات کی خوشی ہے کہ پاکستان میں اس ڈرامے کو اتنا اچھا ردعمل آیا۔ پاکستان ان کے لیے دوسرا گھر ہے۔ جلد ہی پاکستان آؤں گا۔گلثوم علی نے انسٹاگرام پوسٹ میں کہا کہ ہیلو پاکستانی فینز، آپ کے پیغامات اور کمنٹس پر بہت زیادہ شکریہ، آپ کے قیمتی کلمات نے مجھے بہت خوش کردیا ہے، میں نے پاکستان کو پہلے کبھی نہیں دیکھا مگر توقع ہے کہ وبا کے بعد ایک دن وہاں آکر آپ سے مل سکوں گی۔انہوں نے مزید لکھا کہ اس وقت تک اپنا بہت اچھا خیال رکھیں، آپ سب کو استنبول سے نیک تمنائیں۔ آخر میں انہوں نے لکھا پاکستان، پاکستان جیوے پاکستان۔واضح رہے کہ ارطغرل غازی ڈرامے کی کہانی 13ویں صدی میں ’سلطنت عثمانیہ‘ کے قیام سے قبل کی ہے اور ڈرامے کی مرکزی کہانی ’ارطغرل‘ نامی بہادر مسلمان سپہ سالار کے گرد گھومتی ہے جنہیں ’ارطغرل غازی‘ بھی کہا جاتا ہے۔ڈرامے میں کام کرنے والے تمام اداکار راتوں رات پاکستان میں اس حد تک مقبول ہوگئے کے ان کی فین فالوونگ میں دن بہ دن تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔ڈرامے کو ترکی کا ’گیم آف تھرونز‘ بھی کہا جاتا ہے اور اس ڈرامے کو 13ویں صدی میں اسلامی فتوحات کے حوالے سے انتہائی اہمیت حاصل ہے۔ڈرامے میں دکھایا گیا ہے کہ کس طرح 13ویں صدی میں ترک سپہ سالار ارطغرل نے منگولوں، صلیبیوں اور ظالموں کا بہادری سے مقابلہ کیا اور کس طرح اپنی فتوحات کا سلسلہ برقرار رکھا۔ ڈرامے میں سلطنت عثمانیہ سے قبل کی ارطغرل کی حکمرانی، بہادری اور محبت کو دکھایا گیا ہے۔یہ ڈراما پاکستان میں اردو زبان میں پیش کیے جانے سے قبل ہی دنیا کے 60 ممالک میں مختلف زبانوں میں نشر کیا جا چکا ہے۔ یہ ڈراما پانچ سیزن اور مجموعی طور پر 179 قسطوں پر مبنی ہے، اس ڈرامے کو ابتدائی طور پر 2014 میں ٹی آر ٹی پر نشر کیا گیا تھا اور اب یہ ڈراما ’نیٹ فلیکس‘ سمیت دیگر آن لائن سٹریمنگ چینلز پر موجود ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں