0

بھارت نے آزاد کشمیر میں شہری آبادی کو نشانہ بنانا شروع کردیا، شہادتیں

مظفر آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ کے نتیجے میں نیلم ویلی میں 2 عام شہری شہید ہوگئے ہیں۔سوشل میڈیا پر موجود اطلاعات کے مطابق بھارتی فورسز کی جانب سے نیلم ویلی میں فائرنگ اور گولہ باری کا سلسلہ جاری ہے۔ بھارتی فورسز شہری آبادی کو نشانہ بنا رہی ہیں جس کے نتیجے میں اب تک 2 عام شہری شہید ہوچکے ہیں۔ بھارتی فوج کی ایل او سی پر اشتعال انگیزی کے بارے میں ٹوئٹر پر ” نیلم ویلی“ کا ہیش ٹیگ ٹاپ ٹرینڈ کر رہا ہے۔

ایل او سی پر بھارتی اشتعال انگیزی کے حوالے سے آئی ایس پی آر کی جانب سے تاحال کوئی بیان سامنے نہیں آسکا البتہ آزاد کشمیر کی مقامی سیاسی قیادت کی جانب سے بھارتی اشتعال انگیزی کی مذمت کی گئی ہے۔آزاد کشمیر اسمبلی کے سپیکر غلام قادراور سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر سردار عتیق احمد خان نے نیلم ویلی میں بھارتی فورسز کی بلا اشتعال فائرنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے عالمی قوتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ایل او سی پر بھارت کے ہاتھوں نہتے شہریوں کا قتل عام بند کرائے۔گورنر پنجاب چوہدری سرور نے بھی بھارتی فورسز کی اشتعال انگیزی کی مذمت کرتے ہوئے 2 عام شہریوں کی شہادت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

دوسری جانب بھارتی میڈیا کی جانب سے یہ دعویٰ کیا جارہا ہے کہ انڈین فوج نے نیلم ویلی میں دہشتگردوں کے کیمپ کو حملہ کرکے تباہ کردیا ہے۔اس سے قبل بھی 2 بار انڈیا کی جانب سے یہ دعویٰ کیا جاچکا ہے کہ انہوں نے پاکستان میں دہشتگردوں کے کیمپ پر سرجیکل سٹرائیک کی ہے۔خیال رہے کہ جمعہ کے روز وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایک بیان میں کہا تھا کہ انہوں نے اقوام متحدہ کو خط لکھا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ انڈیا نے ایل او سی پر 5 جگہ سے خار دار تار کاٹ دی ہے، تار کاٹنے کے بعد یہ خدشہ ہے کہ انڈیا کوئی فالز فلیگ آپریشن کرسکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں