0

10 منٹ میں پوری کتاب اسکین کرنے والا انقلابی دستی اسکینر

کتابوں، تصاویر، کاغذات اور تصویری البم کو تیزی سے اسکین کرکے ڈجیٹل فارمیٹ بنانا اب بھی ایک مسئلہ بنا ہوا ہے لیکن اب ’سیزر شائن الٹرا‘ اسکینر صرف منٹوں میں ایک پوری کتاب اسکین کرسکتا ہے۔

اس انقلابی اسکینر کو بند کرکے ایک بیگ میں رکھا جاسکتا ہے اور یہ اسکیننگ کے لیے یوایس بی کے ذریعے لیپ ٹاپ کی بیٹری استعمال کرتا ہے۔ اس لیے اسے بار بار چارج کرنے کی کوئی ضرورت نہیں رہتی۔ آپ کی پرانی تصاویر ہوں، رپورٹ کارڈ ہوں، رنگین رسائل و جرائد ہوں یا پھر کوئی بھی کتاب یہ اسکینر فوری طور پرحقیقی رنگوں کے ساتھ ان سب کو اسکین کرکے ڈجیٹل فائلوں میں تقسیم کردیتا ہے۔

سب سے خاص بات اس میں خمیدہ ہموار یعنی کرو فلیٹن ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے جو آٹو فوکس ہے اور کتاب ابھری ہونے کی صورت میں بھی کاغذ کے متن کو ہموار انداز میں اسکین کرتی ہے۔ ایک سیکنڈ فی کلک کے ذریعے آپ منٹوں میں سیکڑوں صفحات کی کتاب ڈجیٹل فارمیٹ میں تبدیل کرسکتے ہیں۔

اس وقت کتب خانوں اور دفاتر میں جو اسکینر استعمال ہورہے ہیں وہ بہت مہنگے اور بھاری بھرکم ہیں جو ہر ایک کی دسترس میں نہیں۔ اس کی قیمت بھی بہت زیادہ نہیں اور ابھی کراؤڈ فنڈنگ کے مرحلے میں موجود اس ایک اسکینر کی قیمت 110 امریکی ڈالر یا 16 ہزار روپے ہے۔

مجموعی طور پر اس میں نصب او سی آر 180 عالمی زبانوں کو پڑھ کر اسے ڈجیٹل فائل میں تبدیل کرتا ہے۔ اس طرح آپ پوری لائبریری کو بہت کم وقت میں اسکین کرسکتے ہیں۔ اس میں خود کار اسکیننگ، خود کار پیج کاؤنٹ، خود کار انداز میں کتاب رکھنے کی پوزیشن کی درستی جیسے اہم فیچرز بھی شامل کے گئے ہیں تاہم اسے آپ اگلے سال 2020ء کی ابتدا میں خرید سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ اسکینر کی صلاحیت 13 میگا پکسل ہے اور اس میں مصنوعی ذہانت کا استعمال کیا گیا ہے جو اسے بہت باسہولت بناتا ہے۔ بالفرض آپ کئی ہزار صفحات اسکین کررہے ہیں تو اس کے لیے ماؤس کی جگہ پاؤں کے ذریعے کلک کرنے والا پیڈل بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں