چینی وزیر اعظم ازبکستان پہنچ گئے

ازبکستان(مانیٹرنگ ڈیسک )ازبکستان کے وزیر اعظم عبد اللہ کی دعوت پر چین کے وزیر اعظم لی کھہ چھیانگ یکم نومبر کو تاشقند پہنچے جہاں وہ شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ممالک کےسربراہاں کی کونسل کے اٹھارویں اجلاس میں شرکت کریں گے اور ازبکستان کا سرکاری دورہ کریں گے۔

لی کھہ چھیانگ نے کہا کہ ازبکستان چین کا دوست ہمسایہ ملک ہے۔ حالیہ برسوں میں دونوں ممالک کے صدور کی قیادت میں چین اور ازبکستان کے تعلقات ترقی کے سنہرے دور میں داخل ہوگئے ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ موجودہ دورے کے دوران دو طرفہ تعلقات اور مختلف شعبوں کے حقیقی تعاون کو مضبوط بنانے کے بارے میں ازبکستان کے رہنماوں سے تبادلہ خیال کیا جائے گا، دونوں ممالک کے جامع اسٹریٹجک ساتھی کے تعلقات کی معیاری ترقی کو فروغ دیا جائے گا اور دونوں ممالک کے عوام کو فائدہ پہنچایا جائے گا۔

لی کھہ چھیانگ نے مزید کہا کہ موجودہ پیچیدہ اور مشکل عالمی صورتحال میں علاقائی سلامتی اور استحکام کے تحفظ اور رکن ممالک کی خوشحال ترقی کے فروغ کے لحاظ سے شنگھائی تعاون تنظیم کا کردار روز بروز اہم ہورہا ہے۔ مجھے امید ہے کہ مختلف فریقین کے ساتھ رواں سال جون میں بشکیک سمٹ میں طے کردہ اتفاق رائے پر عملدرآمد کیا جاسکے گا۔ شنگھائی تعاون تنظیم کی ترقی کو آگے بڑھایا جائے گا اور کثیرالطرفہ تعاون کے حوالے سے عمیق تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ مختلف فریقین موجودہ اجلاس کے موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے “شنگھائی روح” کی بنیاد پر دوستانہ ہمسائیگی اور باہمی مفادات میں مسلسل اضافہ کریں گے۔ رکن ممالک کے درمیان باہمی کھلے پن کو توسیع دی جائے گی۔ تجارتی آزادی اور سہولیات کے معیار کو بلند کیا جائے گا اور خطے میں مختلف ممالک کے عوام کے مفادات کے لئے مزید خدمات سرانجام دی جائیں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں