0

کورونا خطر ناک عالمی وبا ، احتیاط ہی واحدعلاج ہے۔ماہرین

اسلام آباد . کورونا بیماری سے بڑھ کر ایک عالمی وبا ہے، جسکا اس وقت ایک ہی علاج ہے وہ احتیاط ہے۔ ان خیالات کا اظہارڈاکٹر ڈائریکٹر جنرل نیشنل ہیلتھ ایمر جنسی پریپیرڈنیس اینڈ ریسپانس نیٹ ورک ڈاکٹر راجہ امجد محمود نے کورونا کی نئی لہر اور اقدامات کے حوالےسے سینٹر فار ریسرچ اینڈ انٹر نیشنل سٹڑیٹجک انیلسز کےزیر اہتمام ویببنار سے خطا ب کرتے ہوئے کیا ۔انہوںنے سماجی فاصلہ یقینی بنانے اور علامات کو مدنظر رکھتے ہوئے ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنانے کا مشورہ دیا۔ڈاکٹر راجہ امجد محمود نے مسلسل حکومتی کوششوں کوسلام پیش کرتے ہوئے کہا اس خطرناک صورتحال میں خلق خدا کی مدد کا کام کرنے والے مجاہد ہیں۔ محقق و دانشور، صدر کریسا کرنل (ر) بختیار حکیم نے کہا کہ محتاط سماجی رویہ بڑے نقصان سے بچا سکتا ہے ۔ انہوں نے بچاؤ کے طریقوں پر سو فیصد عمل کرنے کو وقت کی ضرورت قرار دیا۔کرنل (ر) بختیار حکیم نے کہا کہ یہ وقت افواہیں پھیلا کر دوسروں کو پریشان کرنے کا نہیں بلکہ آگے بڑھ کر دوسروں کی رہنمائی اور مدد کرنے کا ہے، جس کا سب سے بہتر طریقہ اپنے حلق احباب کو احتیاط اور فوری علاج کیلئے مائل کرنا ہے۔سی ای او سہیل صدیق انصاری نے کہا کہ ہمیں جان پر کھیل کر کروڑوں لوگوں کی زندگیوں کو بچانے کی جدوجہد کرنے والے ڈاکٹرز اور طبی عملے کی کاوشوں کو سراہنا ہو گا۔ انہوںنے کہا کہ ہر شخص کو اس مشکل ترین حالت میں اپنا اور دوسروں کا خیال رکھنا ہو گا، غیر محتاط رویہ ایک نہیں کئی جانوں کو موت کے منہ میں ڈال سکتا ہے۔ ڈائریکٹر ایڈمن وہاب خان نے ابتدائی اور معمول علامات کو بھی نظر انداز نہ کرنے کا بتایا۔ انہوں نے طبی مشوروں اور رابطوں کو تیز کرنے کا کہا۔ چیئر پرسن فرحت رانا ، ایگزیکٹو ڈائریکٹر سمیعہ شاہ نے بھی اس موقع پر اپنے خیالات کااظہار کرتے ہوئے عالمی و قومی سطح پر انسانی جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ اس حوالے سے بڑے پیمانے پر رابطوں کو فروغ دے کر ہی بڑے نقصان سے محفوظ رہا جا سکتاہے، کیونکہ کورونا نے دنیا کے محفوظ مستقبل کو گہنا دیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں