0

بھارتی فوج کشمیر میں ظلم و جبر اور نسل کشی کی انتہا کر رہی ہے، سمعیہ شاہ

اسلام آباد ( اپنے نامہ نگار سے ) قابض بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں ظلم و جبر نسل کشی اور بنیادی انسانی حقوق کی پامالی کی انتہا کر رہی ہے۔ میڈیا انٹرنیٹ پر بندش ہے عالمی اداروں اور بنیادی انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کو مقبوضہ کشمیر کے وزٹ کی اجازت نہیں ہے۔ جعلی ڈومیسائل کے ذریعے مقبوضہ کشمیر میں مسلم اکثریتی آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے کے لیے بھارت ہر ظالمانہ اقدام کر رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہارایگزیکٹو ڈائریکٹر کریسا تھنک ٹینک سمعیہ شاہ اور چیئر پرسن فرحت رانا نے گزشتہ روز سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا، جس کا عنوان کشمیر کی موجودہ صورتحال اور عالمی رائے عامہ تھا۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی لاک ڈاؤن کو ایک سال سے زیادہ ہو چکاہے۔سینئر صحافی ظہیر عالم کشمیری انسانی مذہبی حقوق سے محروم ہیں۔ پانچ اگست کو بھارت کے فاشسٹ مودی نے آئین میں رد و بدل کرتے ہوئے اقوام متحدہ کی قرار دادوں اور ایسے فیصلوں جس میں خود بھارت شریک رہا انحراف کیاکیونکہ ان فیصلوں کے نتیجہ میں پاکستان اور بھارت نے اپنے اپنے آئین میں کشمیر کو متنازع علاقہ تسلیم کیا اور اب بھارت نے 370-A اور دیگر شقیں حذف کر دیں۔سی ای او کریسا تھنک ٹینک سہیل صدیق انصاری نے کہا کہ کشمیر کو ہڑپ کرنے کے لیے بھارت قدم بہ قدم ظالمانہ اقدامات میں پیشرفت کر رہا ہے۔ا نہوں نے کہا کہ روز مقبوضہ کشمیر میں سنگین واقعات ہورہے ہیں کشمیریوں پر عرصہ حیات تنگ کرنے کے لیے ہر حربہ استعمال کیا جا رہا ہے۔ اس موقع پر سکالرز و مصنفین احمد فرح ذکی، ثمینہ خان، عاشق راکی،محمد صادق،ساقیہ ارم،ملک اظہر، کاشف ریاض اعوان، عنبرین ناز،یاسر عباس کاظمی،محمد نجیب اللہ،محمد عرفان اللہ،فائزہ جہاں ودیگردانشوروں نے بھی خطاب کیا۔انہوں نے کہاکہ پہلی بار انسانی حقوق کی تنظیموں نے باقاعدہ ریاست جموں و کشمیر کے وزٹ کا بھارت سے مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ حق خود ارادیت کے لیے کشمیریوں نے لازوال جدوجہد کی ہے۔ اپنی جانوں کی قربانیوں کے ذریعے جدوجہد کی نئی تاریخ رقم کی اور کسی جبر کے سامنے پسپائی اختیار نہیں کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں