لیڈی ہیلتھ ورکرز کے دھرنے کا تیسرا روز، 3 بے ہوش

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے ڈی چوک میں لیڈی ہیلتھ ورکرز کا دھرنا تیسرے روز میں داخل ہوگیا۔

اپنے مطالبات کے حق میں لیڈی ہیلتھ ورکرز اسلام آباد کے ڈی چوک پر دھرنے دیے بیٹھی ہیں اور اب تک دھرنے میں 3 لیڈ ی ہیلتھ ورکرز  بیہوش ہوچکی ہیں۔

لیڈی ہیلتھ ورکرز کی جانب سے پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے مارچ کرنے کا کہا گیا تھا مگر حکومت کی جانب سے دھرنے کا نوٹس لے لیا گیا۔

ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر نے دھرنے میں شرکت کی۔

لیڈی ہیلتھ ورکرز کی صدر رخسانہ انور کا کہنا تھا کہ ضلعی انتظامیہ نے کہا ہے کہ وزیراعظم نے معاملے کا نوٹس لیا ہے اور وزیراعظم کی جانب سے مذاکرات کے لیے خصوصی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔

وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان کی قیادت میں مذاکرات کے لیے وفد دوبارہ دھرنے کا دورہ کرے گا۔

خیال رہے کہ لیڈی ہیلتھ ورکرز نے سروس اسٹرکچر بدلنے، پنشن، لائف انشورنس دینے، تنخواہوں میں اضافے اور انسداد پولیومہم میں تحفظ دینے کے مطالبات کیے ہیں۔

دوسری جانب وزیر داخلہ بریگیڈئیر (ر) اعجاز شاہ نے بھی کہا ہے کہ ڈی چوک پر دھرنا دینے والوں سے بہت بار مذاکرات کر چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ لیڈی ورکرز کا کیس سروس ٹربیونل میں چل رہا ہے جب کہ ان کی منت سماجت کی ہے کہ پارلیمنٹ ہاؤس نہ آئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں