70

بھارت کا جنگی جنون،جنگی طیارے وادی گلوان پہنچادیئے

لداخ(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت نے چین کے ساتھ مشرقی لداخ میں کشیدگی کے پیش نظر لڑاکا طیارے، جنگی ہیلی کاپٹرز اور دیگر فوجی سازو سامان چین سے ملحقہ ایئر بیسز پر بھیج دیے ہیں۔

بھارتی خبر رساں اداروں کے مطابق خلیج بنگال میں بھی اضافی جنگی بحری جہاز روانہ کر دیے گئے ہیں۔ وادی گلوان میں بھارت نے جنگی طیاروں کے ذریعے طاقت کا مظاہرہ کیا ہے۔ فوجی عہدیدار کا کہنا ہے کہ علاقے میں مضبوط طاقت ہوچکی ہے‘ جب کہ ایک ریٹائرڈ کیپٹن کا کہنا ہے کہ انہوں نے ایسی فوجی نقل و حرکت پہلے کبھی نہیں دیکھی۔

تفصیلات کے مطابق، وادی گلوان میں بھارت نے اپنےجنگی طیاروں کی گھن گھرج کے ذریعے طاقت کا مظاہرہ کیا۔ جب کہ اس سے قبل دونوں ممالک سرحدی کشیدگی کم کرنے پر آمادگی بھی ظاہر کرچکے تھے۔ 15 جون کو ہوئے خونی معرکے میں 20 بھارتی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ بھارت وہاں مزید فوج تعینات کرکے فوجی قوت کا مظاہرہ کرنا چاہتا ہے۔

چین اور بھارت کے درمیان حالیہ دنوں میں مشرقی لداخ کی گلوان وادی میں جھڑپوں کے نتیجے میں 20 بھارتی فوجی ہلاک ہو گئے تھے۔ ان جھڑپوں کے بعد دونوں ملکوںکی جانب سے کشیدگی کم کرنے پر اتفاق کے باوجود سرحد پر تناؤ برقرار ہے۔

اطلاعات کے مطابق ‘اپاچی’ لڑاکا ہیلی کاپٹر بھی چینی سرحد کے قریب ایئر بیسز پر پہنچا دیے گئے ہیں۔ یہ ہیلی کاپٹر ہوا سے زمین پر میزائل اور راکٹ فائر کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ بھارت کے ایک اعلٰی فوجی افسر نے ذرائع ابلاغ کو بتایا کہ چین نے لداخ میں ہمارے 20 فوجیوں کو ہلاک کر کے ‘ریڈ لائن’ کراس کی ہے۔

اب بھارت کسی بھی اشتعال انگیز کارروائی کا بھرپور جواب دے گا۔ بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی نے ایک بیان میں کہا تھا کہ اُن کی فوج چین کی کسی بھی اشتعال انگیز کارروائی کا بھرپور جواب دے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں