32

دنیا کی نظرمیں چین کے دو اہم اجلاس

موجودہ حالات میں جب کووڈ ۱۹ کی وباء پوری دنیا کو اپنی گرفت میں لے چکی ہے، چین میں رواں ماہ دو اہم اجلاس منعقد کئے جارہے ہیں، جو اس امر کا واضع ثبوت ہے کہ چین نے اس ءوبا کوشکست دے کر ملک میں سیاسی،سماجی اور اقتصادی سرگرمیاں بحالی کردی ہیں۔ چین کی قومی عوامی کانگریس اور چین کی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس کے یہ دو اجلاس نہ صرف چین کیلئے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں، بلکہ ان اجلاسوں کو بین الاقوامی سطح پر بھی انتہائی اہمیت دی جاتی ہے۔اب سوال یہ ہے کہ چین کی قومی عوامی کانگریس اور چین کی عوامی سیاسی مشاروتی کانفرنس ہے کیا اور ان کی ذمہ داریوں میں کون کون سے امور شامل ہیں؟
چین کی قومی عوامی کانگریس:
عوامی کا نگریس کا نظام چین کا بنیادی سیاسی نظام ہے، جبکہ قومی عوامی کانگریس چین کا اعلی ترین قومی اختیاراتی ادارہ ہے۔یہ ادارہ صوبوں اور مرکزی حکومت کے براہ راست زیر انتظام بلدیاتی شہروں،خصوصی انتظامی علاقوں اور فوج کے منتخب نمائندوں پر مشتمل ہے۔قومی عوامی کانگریس بطور ایک قانون ساز ادارے کے ملک کے اہم سیاسی اور سماجی امور کا فیصلہ کرتی ہے۔ اس اہم قانون ساز ادارے کے فرائض اور اختیارات میں آئین میں ترامیم، آئین کے نفاذ کی نگرانی، فوجداری امور،شہری معاملات، ریاستی اداروں اور دیگراہم معاملات سے متعلق بنیادی قوانین وضع کرنا اور ان میں ترامیم، قومی معیشت اور سماجی ترقی کے منصوبوں اور ان کے نفاذ سے متعلق رپورٹس کا جائزہ، قومی بجٹ اوراس پر عمل درآمد کے حوالے سے رپورٹس پر نظر ثانی کرنا اور ان کی منظوری دینا،صوبوں ،خود اختیار علاقوں اور مرکزی حکومت کے براہ راست زیر انتظام بلدیاتی شہروں کے قیام کی توثیق اور خصوصی انتظامی علاقے کے قیام اور وہاں نافذ کئے جانے والے نظام کا فیصلہ، جنگ اور امن کے حوالے سے فیصلہ، اعلیٰ ترین قومی اختیاراتی ادارے کے راہنماؤں یعنی قومی عوامی کانگریس کی مجلس قائمہ کے اراکین کا انتخاب، عوامی جمہوریہ چین کے صدر مملکت اور نائب صدر مملکت کا انتخاب، وزیراعظم اور ریاستی کونسلروں کی نامزدگی کا فیصلہ، مرکزی فوجی کمیشن کے چیئرمین کا نتخاب اور چیئرمین کی جانب سے مرکزی فوجی کمیشن کے دیگر اراکین کی نامزدگی کا فیصلہ اور اعلیٰ ترین عوامی عدالت کے صدر کا انتخاب کرنا شامل ہے۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ قومی عوامی کانگریس کو مذکورہ بالا شخصیات کوان کے عہدوں سے برطرف کرنے کا اختیار بھی حاصل ہے۔ قومی عوامی کانگریس کا اجلاس سال میں ایک بار منعقد کیا جاتا ہے۔اجلاس نہ ہونے کے دوران قومی وعوامی کانگریس کی مجلس قائمہ اس کے مستقل ادارے کی حیثیت سے اعلی عوامی اختیارات کی حامل ہوتی ہے۔ قومی عوامی کانگریس کی مجلس قائمہ صدر، نائب صدر، سیکریٹری جنرل اور دیگر اراکین پر مشتمل ہوتی ہے۔
چین کی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس :
چین کی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس چینی کمیونسٹ پارٹی کی قیادت میں مختلف سیاسی جماعتوں کے تعاون اور مشاورت کا اہم ادارہ ہے۔ چینی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس کی قومی کمیٹی چینی کمیونسٹ پارٹی،مختلف جمہوری جماعتوں،غیر جماعتی شخصیات، مختلف اقلیتی قومیتوں اور حلقوں سے تعلق رکھنے والے مندوبین اور خصوصی طورپر مدعو کئے جانیوالے مندوبین پر مشتمل ہے۔ چینی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس کے مندوبین کا انتخاب ہر پانچ سال بعد کیا جاتا ہے۔چینی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس کی قومی کمیٹی اور مقامی کمیٹیوں کے اہم فرائض اور اختیارت میں سیاسی مشاورت،جمہوری نگرانی اور سیاسی معاملات میں حصہ لیتے ہوئے صلاح مشورہ کرنا شامل ہے۔
ستمبر سنہ انیس سو انچاس میں چینی عوامی سیاسی مشاورتی کانفرنس کے پہلے کل رکنی اجلاس نے قومی عوامی کانگریس کے فرائض اور اختیارات کے تحت تمام چینی باشندوں کی ترجمانی کرتے ہوئے عوامی جمہوریہ چین کے قیام کا اعلان کیا اورایک نئی تاریخ رقم کی۔
دنیا بھر کے ذرائع ابلاغ کی نظریں ہر سال چین کے ان دو اہم اجلاسوں پر موکوز رہتی ہیں۔ رواں سال ان اجلاسوں کی اہمیت کہیں زیادہ بڑھ چکی ہے، کیونکہ دنیا یہ جاننا چاہتی ہے کہ موجودہ صورتحال میں جبکہ دنیا کی معیشت بری طرح متاثر ہوئی ہے، دنیا کی دوسری بڑی معیشت کی حیثیت سے چین کی حکمت عملی کیا ہو گی۔ دنیا کی نظریں چینی صدرمملکت کے ا س پالیسی بیان پر مرکوز ہوں گی جس میں وہ چین کے مستقبل اور مختلف ممالک کے ساتھ چین کے تعلقات کا تذکرہ کر سکتے ہیں۔دنیا یہ بھی جاننا چاہتی ہے کہ دیگرممالک اور شخصیات کی جانب سے تائیوان، ہانگ کانگ اور سنکیانگ جیسے اندرونی معاملات میں بے جا مداخلت پر چین کا کیا ردعمل سامنے آتا ہے۔ دنیا چین اور امریکہ دو بڑے ممالک کے مابین حالیہ کشیدگی کے حوالے سے مستقبل کیلئے چین کی حکمت عملی سے بھی واقفیت حاصل کرنا چاہتی ہے۔دنیا کی نظریں یقیناً اس بات پر بھی مرکوز ہیں کہ کووڈ ۱۹ جیسی عالمی وباء سے نمٹے کیلئے چین کی مستقبل میں کیا حکمت عملی ہے اور چین اس حوالے سے مستقبل میں دنیا کے ساتھ کس طرح تعاون کرے گا۔
چین کے ہمسایہ اور بہترین دوست ملک ہونے کے ناطے پاکستان کی توجہ بھی یقیناً چین کے ان دو اہم اجلاسوں پر مرکوز رہے گی، کیوں کہ چین کی ترقی خطے کی ترقی ہے اور پاکستان چین خطے کے دو اہم ممالک، بہترین دوست اور ہمسائے ہیں۔چینی معیشت کی بحالی پاکستان کیلئے بھی انتہائی اہمیت کی حامل ہے، کیونکہ چین نے پاکستان میں چین پاکستان اقتصادی راہداری سمیت دیگر کئی اہم منصوبوں پر اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری کر رکھی ہے۔
تحریر : طاہر محمود

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں