0

آن لائن نماز تروایح ادا کی جا سکتی ہے یا نہیں ؟ معروف عالم دین نے اہم اعلان کر دیا

لاہور(نیوز ڈیسک )دارالعلوم جامعہ نعیمیہ کے ناظم اعلیٰ وممبراسلامی نظریاتی کونسل علامہ ڈاکٹرراغب حسین نعیمی نے کہاہے کہ آن لائن نماز تراویح ادا کرناشرعی لحاظ سے جائز نہیں۔ٹی و ی چینلز پر قرآن کریم کی تلاوت کو اسلامی آداب کیساتھ سنا جائے،نیکیوں ، رحمتوں اور سعادتوں ولا متبرک مہینہ سایہ فگن ہو چکا ہے ۔ اس ماہ کے روزے اللہ وحدہ لا شریک نے فرض کیئے ہیں۔ جو اس ماہ کو پائے اس کیلئے روزہ رکھنا ضروری ہے ۔مگر بیمار ، مسافر ، یا ضعیف العمر جو استطاعت نہ رکھتا ہو روزہ نہ رکھے۔ بیمار یا مسافر اس کی قضاء کرے جبکہ ضعیف العمر ایک روزے کے بدلے فدیہ دے دے۔ ایک روزے کا فدیہ گندم کے اعتبار سے 100روپے ، جو کے اعتبار سے 200روپے ، کھجور کے اعتبار سے 700روپے اورمنقہ کے اعتبار سے 2100روپے ہے۔ہر سال مسلمان اس ماہ کے آنے کے منتظر ہوتے ہیں۔ اب کی بار جب یہ ماہ سایہ فگن ہو رہا ہے تو منظر ہی بدلا ہو ا ہے ۔ جہاں اجتماعی طور پر اس ماہ کی برکات کے حصول کیلئے کوششیں کی جاتی تھیں وہاں اب کرونا وبا کی وجہ سے انفرادی طور پر اپنے رب کو منانا ہے ۔ جہاں کثیر وقت مسجد میں گزارا جاتا تھا وہاں اب زیادہ وقت گھر میں عبادت کرتے ہوئے گزارنا ہے ۔ اگر مساجد میں کرونا وبا کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے تو وہیں مسلمان اپنے اپنے گھروں کو باجماعت نماز کی ادائیگی کے ذریعے کروڑوں مساجد بنا لیں۔گھروں کو تلاوت قرآن مجید سے مزین کر لیں اور درود پاک،میلادشریف سے گھروں کو آباد کرلیں۔ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز خطبہ جمعہ کے دوران کیا۔انہوں نے مزید کہاکہ کرونا وبا کے پھیلاؤمیں مساجد کے حوالہ سے احتیاطی تدابیر کے طور پر صدر پاکستان اور علمائے کرام کے درمیان20نکاتی اعلامیہ پر اتفاق ہوا ہے ۔ اس میں کچھ ذمہ داریاں نمازیوں کی ہیں اور کچھ انتظامیہ مسجد کی ۔ نمازیوں کیلئے ضروری ہے کہ وہ گھر سے وضوکر کے تشریف لائیں۔ گھر سے جائے نماز لانے کا اہتمام کریں۔صابن سے 20سیکنڈ تک ہاتھ دھوکر آئیں۔ وہ ماسک پہن کر مسجد آئیں۔ مسجد میں نہ کسی سے مصافحہ اور معانقہ کریں اور نہ ہی مجمع لگا ئیں۔ سنن اور نوافل گھر سے پڑھ کر آئیں اور گھر جا کر پڑھیں۔ مسجد میں جگہ نہ ملے تو واپس چلے جائیں اور گھر جا کر اپنی نماز مکمل کر لیں۔ جبکہ انتظامیہ مسجد کیلئے ضروری ہے کہ وہ مسجد کے فرش سے قالین اور دریاں اٹھالیں ۔ روزانہ کی نمازیں مسجد کے صحن میں ادا کریں۔ مسجد کی حدود کے باہر انتظام نہ کریں۔ نہ فٹ پاتھ پر اور نہ ہی سڑکوں پر ۔ مسجد کے فرش کو جراثیم کش محلول سے روزانہ دھوئیں۔ مسجد میں صف بندی کیلئے نشانات لگا دیئے جائیں ، مسجد میں اجتماعی سحری اور افطاری کا انتظام نہ کریںاور کسی بھی صورت میں مسجد میں اجتماع نہ ہونے دیں ۔ آتے جاتے نمازیوں میں فاصلہ کا اہتمام کروائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں