روزہ امراض پیٹ کیلئے مفید، قوت مدافعت بڑھانے کا سبب ہے، ماہرین

اسلام آباد(نیو زڈیسک)ماہرین امراض پیٹ و جگر کا کہنا ہے کہ روزہ رکھنا نہ صرف نظام انہضام کے لیے انتہائی مفید ہے بلکہ روزہ رکھنے سے انسان میں قوت مدافعت بڑھتی ہے جوکہ کئی متعدی امراض بشمول کرونا وائرس سے لڑنے میں مدد دے سکتی ہے، مسلسل روزے رکھ کر وزن میں کمی لائی جاسکتی ہے جبکہ روزے رکھنا دماغی صحت کے لیے بھی انتہائی مفید ہے۔ان خیالات کا اظہار ماہرین امراض پیٹ وجگر نے پاک جی ای اینڈ لیور ڈیز سوسائٹی (پی جی ایل ڈی ایس) کے زیر اہتمام جمعہ کے روز آن لاین سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔آن لائن سیمینارسے ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے رجسٹرار اور معروف فزیشن پروفیسر امان اللہ عباسی، لیاقت نیشنل اسپتال کی ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر لبنیٰ کمانی، معروف ماہر امراض پیٹ و جگر اور پی جی ایل ڈی ایس کے سرپرست اعلٰی ڈاکٹر شاہد احمد، سوسائٹی کے صدر ڈاکٹرسجاد جمیل، جناح اسپتال کراچی کی ڈاکٹر نازش بٹ اور ڈاکٹر حفیظ اللہ شیخ نے بھی خطاب کیا۔ڈاؤ یونیورسٹی کے رجسٹرار پروفیسر امان اللہ عباسی کا کہنا تھا کہ رمضان کے روزے مسلمانوں کے لئے انتہائی رحمت کا باعث ہیں کیونکہ ان کے ذریعے اللہ تعالیٰ انسانی جسم کے نظام انہضام کی مرمت فرماتا ہے، روزہ رکھنے سے انسانی جسم کی قوت مدافعت بڑھتی ہے جو اسے کورونا وائرس سے ہونے والی انفیکشنز سمیت دیگر بیماریوں سے لڑنے میں مدد دیتی ہے، روزے سے انسانی دماغی صلاحیت بہتر ہوتی ہے جبکہ یہ بھی دیکھا گیا ہے کہ روزے رکھنے سے جسم میں مختلف بیماریوں کے وائرس کی تعداد کم ہوتی ہے جس کے نتیجے میں بیماریوں پر قابو پانے میں مدد ملتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں