آج کی سب سے بڑی خبر: کورونا وائرس کے باعث امریکی جیلوں میں ایک لاکھ سے زائد اموات

امریکہ (ویب ڈیسک) کورونا وائرس نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے جس کے بعد ہر گزرتے دن کے ساتھ اس کی تباہی میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ امریکہ میں کورونا وائرس کی تباہی نے پوری دنیا کو حیران کر دیا ہے۔ امریکہ جیسے ملک نے کورونا وائرس کے آگے ہار مان لی ہے، ابھی تک وہ اس پر قابو نہیں پا سکے۔ اسی دوران امریکی ماہرین نے حکومت کو جیلوں میں موجود قیدیوں کے حوالے سے خبردار کر دیا ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ جیلوں میں موجود قیدی اور ان سے ملنے والے افراد کورونا وائرس سے متاثر ہو سکتے ہیں اور اس وجہ سے تباہی میں بھی اضافہ ہوگا۔ ایک اندازے کے مطابق ماہرین کا کہنا تھا کہ جیلوں میں ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 1 لاکھ تک ہو سکتی ہے۔اس ضمن میں امریکن سول لبرٹیز یونین نےبھی خدشہ ظاہر کیا ہے کہ عالمی وبا کے امریکی جیلوں پر خطرناک اثرات مرتب ہو سکتے ہیں اور ایک لاکھ اموات کا خدشہ ہے۔تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق جیلوں میں موجود 23 ہزار قیدیوں اور 76 ہزار قیدیوں سے ملنے والوں کی اموات ہو سکتی ہیں۔یاد رہے کہ امریکہ وہ ملک ہے جہاں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد سب سے زیادہ ہے۔ ابھی تک امریکہ میں 8 ہزار سے زیادہ افراد کوروناوائرس کا شکار ہو چکے ہیں جبکہ 47 ہزار سے زیادہ افراد کورونا وائرس کا شکار ہو کر ہلاک ہو چکے ہیں ۔امریکی حکومت کی جانب سے کورونا وائرس سے نمٹنے کی ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے لیکن اس میں ابھی تک کسی قسم کی کوئی کامیابی سامنے نہیں آئی۔ لیکن اسی دوران امریکی ریاست میسوری نے الزام عائد کیا ہے کہ چین عالمی وبائی مرض پھیلانے کے ذمہ دار ہیں۔ریاست میسوری کے اٹارنی جنرل ایرک شیمٹ نے عدالت میں ایک تحریر ی بیان میں کہا ہے چینی حکومت نے کورونا وائرس کے خطرات اور متعدی نوعیت کے بارے دنیا سے جھوٹ بولا۔یاد رہے کورونا وائرس کے الزامات پر مشتمل چینی حکومت کے خلاف کسی امریکی عدالت میں یہ اپنی نوعیت کا پہلا مقدمہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں