0

باجماعت نماز کے تنازع پر گورنر کو فارغ کردیا گیا

خرطوم(نیوز ڈیسک)دنیا بھرمیں کورونا وائرس کی وجہ سے جہاں حفاظتی اقدامات سامنے آئے ہیں وہیں ان پر تنازعات نے بھی جنم لیا ہے، ایسا ہی ایک تنازعہ افریقی ملک سوڈان میں دیکھنے کو آیا ہے جہاں ملکی وزیراعظم نے باجماعت نماز پر پابندی کے حکومتی احکامات کی مخالفت پر گورنر کو عہدے سے فارغ کردیا ہے۔سوڈان کے وزیر اعظم عبداللہ حمدوک نے داراحکومت خرطوم کے گورنر کو برطرف کر دیا ہے۔ گورنر نے اس سے قبل ملک میں کورونا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے مذہبی اجتماعات پر لگائی جانے والی پابندی کی مخالفت کی تھی۔خرطوم کے گورنر جنرل احمد حماد محمد نے اُس حکم پر عمل درامد کرنے سے انکار کر دیا تھا جس کے تحت گرجائوں اور مساجد میں عبادت پر پابندی عائد کی گئی تھی۔ سوڈان ٹربیون کے مطابق وزارت مذہبی امور کی جانب سے ملک بھرمیں عبادات اور اجتماعات پر پابندی عائد کی تھی جس پر گورنر احمد حماد نے وزارت کو جوابی خط لکھا اور پابندیوں کو ماننے سے انکار کردیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں