کیا بلڈ کینسر کی دوا سے کروناوائرس کا علاج ممکن ہے؟جانئے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)برطانوی دوا ساز کمپنی ’اسٹرازینیکا‘ نے بلڈ کینسر کی دوا سے کروناوائرس کا علاج دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے، کرونامریضوں پر جلد تجربہ کیا جائے گا۔غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق دوا ساز کمپنی نے اپنا منصوبہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ خون کا سرطان کے علاج کے لیے استعمال ہونے والی دوا اب کروناوائرس کے مریضوں پر آزمائی جائے گی۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ممکنہ طور پر جلد 400 کرونامریضوں پر بلڈ کینسر دوا ’کیلکوئنس‘ کا تجربہ کیا جائے گا۔ کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ مذکورہ دوا سے انتہائی نگہداشت مریضوں کی حالت میں بہتری کے حتمی ثبوت موجود ہیں، ممکنہ طور پر کیلکوئنس کرونامریضوں کا علاج کرے گا۔اسٹرازینیکا کا کہنا ہے کہ یہ دوا مریض کے پھیپڑوں میں موجود وائرس کی افزائش کو روکتی ہے۔ تحقیق کے مطابق کرونا زیادہ تر مریضوں کے پھیپڑوں پر اثر انداز ہوتا ہے۔خیال رہے کہ کیلکوئنس کو امریکی دارالحکومت واشنگٹن کے ایک اسپتال میں کروناوائرس کے مریضوں پر آزمایا گیا جس کا مثبت نتیجہ سامنے آیا اسی بنیاد پر دیگر مریضوں پر اس دوا کا تجربہ کیا جائے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں