ویٹ لفٹر صائمہ شہزاد اور بیٹےکی گھر میں ویٹ لفٹنگ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)ساوتھ ایشین گیمز کی میڈلسٹ ویٹ لفٹر صائمہ شہزاد کے سات سالہ بیٹے نے بھی اپنی والدہ کی طرح ویٹ لفٹنگ شروع کر دی۔کورونا وائرس کے باعث ہیلتھ کلب بند ہونے کی وجہ سے ماں بیٹا دونوں گھر پر ہی ٹریننگ کرتے ہیں۔‏صائمہ شہزاد نے گزشتہ برس نیپال میں ہونے والے ساوتھ ایشین گیمز میں 55 کے جی کلاس میں برانز میڈل جیتا تھا، صائمہ اسی ویٹ کٹگری میں نیشنل چیمپئین بھی ہیں، ویٹ لفٹنگ صائمہ شہزاد کے خون میں رچی بسی ہے۔صائمہ شہزاد سابق اولمپئین ویٹ لفٹر محمد منظورکی صاحبزادی ہیں یہی وجہ ہے کہ صائمہ شہزاد ویٹ لفٹنگ سے دور نہیں رہ سکتیں۔کورونا وائرس کے باعث فٹنس جم بند ہوئے تو صائمہ شہزاد نے گھر پر ہی ویٹ ٹریننگ کا سامان اکٹھا کر لیا۔‏صائمہ شہزاد نے گھر پر ٹریننگ شروع کی تو ساتھ ہی سات سالہ بیٹے عبیر کی بھی کوچنگ شروع کر دی اور اب دنوں ماں بیٹا اکٹھے ٹریننگ کرتے ہیں۔صائمہ شہزاد کہتی ہیں کہ عبیر کی ویٹ لفٹنگ میں بہت دلچسپی ہے، وہ ضرور بیٹے کو بھی انٹر نیشنل ویٹ لفٹر بنائیں گی۔‏ماں بیٹے کا پیغام ہے کہ کورونا وائرس سے ڈرنا نہیں چاہیئے بلکہ ہمت سے اس کے ساتھ لڑنا ہے اور اس کے لیے گھروں میں رہیں، فٹنس پر توجہ دیں اور خود کو مضبوط بنائیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں