0

PMDC کا اہم ریکارڈغائب ہونے کا انکشاف

اسلام آباد(نیو زڈیسک)پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل (پی ایم ڈی سی) کا اہم ریکارڈ، لیپ ٹاپس اور ہارڈ ڈسک غائب ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔رجسٹرار پی ایم ڈی سی حفیظ الدین نے اس حوالے سے تحریری رپورٹ اسلام آباد ہائی کورٹ میں جمع کرا دی جس میں کہا گیا ہے کہ پی ایم ڈی سی بحالی کے بعد مختلف ڈیپارٹمنٹس کا ریکارڈ غائب پایا گیا۔پی ایم ڈی سی نے انٹری ٹیسٹ میں اہلیت کے نمبرز بڑھا دیےرپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مختلف ڈیپارٹمنٹس کی چابیاں، 3 لیپ ٹاپس، ہارڈ ڈسک اور وائی فائی ڈیوائس تک غائب ہیں۔رپورٹ کے مطابق پی ایم ڈی سی کی ملکیت والی 5 گاڑیاں غائب ہیں، جو گاڑیاں موجود ہیں ان کی چابیاں موجود نہیں، پی ایم ڈی سی کی ملکیت والے 3 گھروں کی چابیاں بھی ابھی تک واپس نہیں کی گئیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کالعدم قرار دیئے گئے پاکستان میڈیکل کمیشن کے سیکریٹری اور وزارتِ صحت کو صورتِ حال سے آگاہ کر دیا گیا ہے۔رپورٹ میں عدالت کو بتایا گیا ہے کہ وزارتِ صحت سے ابھی تک کوئی جواب موصول نہیں ہوا، جبکہ یاددہانی کا خط بھی بھیجا جا چکا ہے۔رپورٹ کے مطابق کالعدم پاکستان میڈیکل کمیشن کے سیکریٹری ڈاکٹر ارسلان حیدر سے بھی اس حوالے سے رابطہ کیا گیا، جس پر ڈاکٹر ارسلان حیدر نے خود آنے سے صاف انکار کر دیا اور کہا کہ اس معاملے پر وزارتِ صحت سے ہی بات کریں۔رجسٹرار پی ایم ڈی سی کا اپنی رپورٹ میں کہنا ہے کہ پی ایم ڈی سی بحالی کے بعد 1000 رجسٹریشن سرٹیفکیٹس جاری کر چکی ہے، کُل 6500 زیر التوا رجسٹریشن کیسز کی نشاندہی کی جا چکی ہے۔عدالتِ عالیہ میں جمع کرائی گئی رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ پی ایم ڈی سی نے کورونا کے باعث ابھی صرف 45 ملازمین کے محدود اسٹاف کے ساتھ کام شروع کیا ہے۔رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ڈاکٹروں کی سہولت کے لیے کراچی اور لاہور سمیت تمام علاقائی دفاتر بھی فعال بنا دیئے گئے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں