لاہور کی ایک ہی گلی میں کورونا کے 42 مریض سامنے آگئے، افسوسناک تفصیلات منظر عام پر

لاہور (ویب ڈیسک) پنجاب کے دارالحکومت لاہورکی ایک ہی گلی سے کورونا وائرس کے 42 مریض سامنے آگئے ہیں جس کے بعد گلی کو مکمل طور پر سیل کردیا گیا ہے۔سوڈیوال کے علاقے سکندریہ کالونی میں تین روز قبل کورونا وائرس کے 10 مریض سامنے آئے تھے لیکن اب یہ تعداد بڑھ کر 42 ہوگئی ہے۔سکندریہ کالونی کی اس گلی میں 57 گھر ہیں اور اسے مکمل طور پر لاک ڈاؤن کردیا گیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ اور ٹائیگر فورس کے جوان مل کر متاثرہ گھروں میں راشن ، ادویات اور دیگر ضروری سامان پہنچا رہے ہیں۔حکام کا کہنا ہے کہ اس گلی میں کورونا سے متاثرہ ایک شخص کچھ روز پہلے سندھ سے آیا تھا ۔ پہلے اس کے گھر والوں میں کورونا وائرس پھیلا جس کے بعد پوری گلی میں یہ وبا پھیل گئی ، سکندریہ کالونی کے دیگر علاقوں سے بھی لوگوں کے ٹیسٹ کیے جارہے ہیں۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ این اے 156 اور این اے 157 میں رضا کار (ٹائیگرز) فورس تشکیل دے دی گئی، فورس میں شامل رضا کاروں کی تصدیق کا عمل جاری ہے، یہ فورس عزت نفس مجروح کیے بغیر راشن مستحقین تک پہنچائے گی، وزیر اعظم نے احساس پروگرام کے تحت 144 ارب کی خطیر رقم مختص کی۔انہوں نے کہا کہ پہلے مرحلے میں 12 ہزار روپے فی خاندان تقسیم کیے جا رہے ہیں، ایک کروڑ 12 لاکھ مستحق خاندانوں میں امدادی رقوم تقسیم کی جا رہی ہیں، پنجاب حکومت کے ساتھ انصاف امداد پیکج میں 25 لاکھ خاندانوں کو 25، 25 ہزار دیں گے۔وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ انصاف امداد پیکج کے تحت بھی امداد مکمل طور پر سیاست سے بالا ہوگی۔واضح رہے کہ وزیر اعظم عمران خان سے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی ملاقات کرتے ہوئے وزیر اعظم کو کورونا ریلیف فنڈ کے لیے وزارت خارجہ کے افسران اور سٹاف کی جانب سے ایک کروڑ ایک لاکھ بیاسی ہزار کا چیک پیش کیا.شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزارت خارجہ کورونا وائرس کے خلاف قومی جدوجہد کو مستحکم کرنے کے لیے تیار ہے۔ وزیر اعظم نے کورونا ریلیف فنڈ کے حوالے سے وزارت خارجہ کے افسران اور سٹاف کے جذبے کو سراہا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں