چین نے سرحد پار جوئے بازی ، ٹیلی کام اور انٹرنیٹ فراڈ کیخلاف کریک ڈاؤن سخت کردیا

بیجنگ(نیوز ڈیسک) چین کی وزارت برائے عوامی تحفظ( ایم پی ایس ) نے اعلان کیا ہے کہ انہوں نے کروناوائرس وبائی مرض کے دوران سرحد پار جوا کے ساتھ ساتھ ٹیلی کام اور انٹرنیٹ فراڈ کے خلاف کریک ڈاؤن تیز کردیا ہے کیونکہ اس عرصے کے دوران ایسے جرائم میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ایم پی ایس نےکہا ہے کہ ان جرائم میں ملوث افراد کے ساتھ ساتھ ہدایات فراہم کرنے والے ،تیکنیکی معاونت اور سرپرستی فراہم کرنے والوں اور جوا کی رقم کی ادائیگی میں مدد فراہم کرنے والے اس آپریشن کے اہداف ہوں گے ۔وزارت نے خبردار کیا ہے کہ سرحد پار آن لائن جوا میں حصہ لینا غیر قانونی ہے اور عوام پر زور دیا ہے کہ اس قسم کی سرگرمیوں سے دور رہیں اور مختلف قسم کے ٹیلی کام اور انٹرینیٹ فراڈ سے محتاط رہیں ۔ہم عظیم قوم اس لئے نہیں بن سکے کیونکہ ۔۔۔وزیر اعظم عمران خان نے ایسی وجہ بتا دی کہ ہر کوئی سوچنے پر مجبور ہو جائے گاایم پی ایس نے عزم ظاہر کیا ہے کہ ادائیگی کی منتلقی اور تصیفہ کرنے کی خدمات فراہم کرنے والی تنظیموں کے خلاف کارروائی کے ذریعے جوا کے رقم کی غیر قانونی ترسیل کو جڑ سے اکھاڑ پھینکا جائیگا ۔ایم پی ایس نے کہا ہے کہ قانون توڑنے والوں کو سرحدوں پر انٹری اورایگزیٹ پر پابندیوں کاسامنا کرنا پڑے گااور اس کے ساتھ ان کے پرنسپل کریڈیٹ ریٹنگ پر جرمانہ عائد جائےگا ۔مزید کہا گیا ہے کہ جوا بازوں اور غیر قانونی سرگرمیوں کے پس پردہ کام کرنے والوں کی ایک بلیک لسٹ بھی قائم کی جائے گی ۔وزارت نے عوام سے کہا ہے کہ وہ متعلقہ جرائم اور خلاف ورزیوں بارے رپورٹ دیں اور اطلاع دینے والوں کی پرائیوسی اور سیکیورٹی کے تحفظ کو یقینی بنانے کا عزم ظاہر کیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں