70ہزار افراد قرض واپسی ملتوی کرنے کی درخواست کرچکے، گورنر اسٹیٹ بینک

اسلام آباد(نیو زڈیسک)اسٹیٹ بینک کے گورنر رضا باقر نے کہا ہے کہ اب تک 70 ہزار افراد اپنے قرضوں کی واپسی ملتوی کرنے کی درخواست کر چکے، ان کے قرضوں کی رقم 5 ارب روپے بنتی ہے۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ ہمیں بین الاقوامی مالیاتی اداروں سے خاصی مدد حاصل ہے جس سے معیشت کو سہارا دینے کے حکومتی پیکیج میں مدد ملے گی، پاکستانی معیشت کے بنیادی اشاریے مضبوط ہیں، اسٹیٹ بینک نے جو شرح سود کم کی وہ دنیا بھر میں سب سے زیادہ کمی تھی۔انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ بینک شرح سود میں کمی کا فیصلہ آنے والے دنوں میں مہنگائی کو دیکھ کر کرتا ہے، گزشتہ دو مہینوں میں مہنگائی میں کمی آئی ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے اہم مسئلہ روزگار کا ہے، روزگار کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے اسٹیٹ بینک نے اسکیم کا اعلان کیا ہے، جو بزنس مین بھی اپنے ورکرز کے روزگار کو برقرار رکھے گا اسے 5 فیصد پر قرض ملے گا۔ اگر بزنس مین ایکٹو ٹیکس پیئر لسٹ پر ہوگا تو اسے ایک فیصد کی رعایت ملے گی۔انہوں نے کہا کہ اس اسکیم میں چھوٹے کاروبار کے لئے زیادہ فوائد ہیں، اگر تنخواہوں کا خرچ 20 کروڑ سے کم ہو تو سارا خرچ اس اسکیم سے حاصل کیا جاسکتا ہے، روزگار اسکیم 3 سال کے لیے ہے، مگر اس میں اضافہ ہوسکتا ہے۔گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ وبا پھیلنے سے پہلے معیشت کی بنیادیں مستحکم ہورہی تھیں، تمام انڈیکیٹرز بہتری کی طرف جارہے تھے۔ اسٹاک مارکیٹ بڑھ رہی تھی، اسکیم ریٹ نیچے آرہا تھا اور سرمایا کاروں کی دلچسپی پاکستان میں بڑھ رہی تھی۔ یہ بنیادیں اسی طرح کھڑی ہوئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ بینک کے ریزرو کم ہونے کی و جہ کمرشل بوروئنگ کی ری پیمنٹ آگئی تھی، آئی ایم ایف سے بات چیت کرکے ایک ارب چالیس کروڑ ڈالر سیکیور کئے ہیں، آئی ایم ایف کا اس حوالے سے 16 اپریل کو اجلاس ہوگا۔ ورلڈ بینک اور اے ڈی بی سے بھی قرضے لے رہے ہیں۔رضا باقر کا کہنا ہے کہ ساری ایمرجنگ مارکیٹ سے کپیٹل نکل رہا ہے، پاکستان کے ذخائر کچھ کم ہوئے ہیں لیکن اور ممالک کے بھی کم ہوئے ہیں۔ دیگر ممالک میں بھی اسکیم ریٹ اوپر گیا ہے، ہمارا بھی اوپر گیا ہے۔ عالمی برادری ہمارے معاشی پیکجز کو سپورٹ کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ جن لوگوں نے قرضے لئے ہوئے ہیں، انہیں مشکل کا سامنا ہے۔ قرض داروں کو پرنسپل پر ایک سال کی توسیع مل رہی ہے۔ ایک مہینے میں 70 ہزار قرض لینے والوں نے بینکوں سے رابطہ کیا ہے۔ 5 ارب روپے کی ایک ہفتے میں ہی توسیع ہوگئی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں