چین کے شہر ووہان سے لاک ڈاؤن ختم لیکن چین کے ایک اور شہر کو اب لاک ڈاؤن کردیا گیا

بیجنگ(نیوز ڈیسک) چین کے شہر ووہان میں 76روز بعد لاک ڈاؤن ختم کر دیا گیا ہے اور وہاں کے شہری اس طویل طبی قید کے بعد رہائی کی خوشیاں منا رہے ہیں لیکن اسی دوران چین کے ایک اور شہر سے افسوسناک خبر آ گئی ہے جہاں کورونا وائرس کا پھیلاؤ بڑھنے پر لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے۔ اس شہر کا نام سوئی فین ہی (Suifenhe)ہے جوچین کے روس کے ساتھ ملحق شمالی بارڈر پر واقع شہر ہے۔ اب اس شہر کی انتظامیہ نے شہریوں کو گھروں میں بند رہنے کا حکم مدے دیا ہے۔رپورٹ کے مطابق انتظامیہ نے حکم جاری کیا ہے کہ ایک گھر سے صرف ایک شخص تین دن بعد انتہائی ضروری اشیاءخریدنے کے لیے گھر سے نکل سکتا ہے۔ اس کے علاوہ کوئی شخص گھر سے باہر نہیں نکلے گا۔ اس صوبے میں گزشتہ روز کورونا وائرس کے 25نئے مریض سامنے آئے ہیں جس پر اس شہر کی انتظامیہ نے یہ اقدام اٹھایا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ ان مریضوں میں ان لوگوں نے وائرس منتقل کیا جو روس سے چین میں داخل ہوئے۔ چنانچہ سوئی فین ہی بارڈر پر ہونے کی وجہ سے وہاں وائرس پھیلنے کا خطرہ ہے جس کے پیش نظر لاک ڈاؤن کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں