0

کورونا وبا؛ لاک ڈاؤن کے باوجود ریشم کے کیڑے پالنے کا کام تیزی سے جاری

اسلام آباد(نیو ز ڈیسک) کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے جہاں کئی کاروبار اور صنعتیں عارضی طور پر بند ہیں وہیں گھروں میں ریشم کے کیڑے پالنے کا کام تیزی سے جاری ہے۔لاک ڈاؤن نے کاروبارزندگی کومتاثرکیا ہے اورکورونا جیسے موذی مرض سے بچنے کے لیے لوگ نے اپنی سرگرمیاں محدود کرکے خود کو گھروں تک محدود کررکھا ہے۔ اس اقدام سے بہت سے لوگوں کا روزگار بھی متاثرہورہا ہے تاہم دوسری طرف ریشم کے کیڑے پالنے والوں کو لاک ڈاؤن سے کوئی فرق نہیں پڑا ہے اور گھروں میں رہ کر پہلے سے زیادہ ریشم کے کیڑے پال رہے ہیں۔محکمہ جنگلات کے شعبہ سیری کلچر کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر محمدفاروق بھٹی نے بتایا کہ کوروناوائرس کی وجہ سے پروازوں کی بندش کے باعث ہم چین سے بروقت بیج نہیں منگواسکے تھے۔ 15 مارچ کو ہم نے صرف 150 پیکٹ منگوائے تھے کیونکہ اس وقت کیڑوں کی پرورش کا وقت تیزی سے گزررہا ہے۔ یہ سیزن 15 فروری سے15 اپریل تک ہے۔ اس سیزن میں ہم اپنا مجموعی ہدف پورا نہیں کرسکیں گے البتہ ہم نے 650 پیکٹ تقیسم کئے ہیں، یہ بیج چھانگا مانگا، چیچہ وطنی، مٹھہ ٹوانہ، سرگودھا، ،منڈی بہاوالدین، بہاولپور اورخانیوال کے مختلف علاقوں میں تقسیم کیا گیا تھا اور اس بیج سے اب ریشم کی ٹونٹیاں تیارہونے کے قریب ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں