0

شکر الحمد اللہ۔۔!! کورونا وائرس سِرے سے ختم۔۔!! پاکستان کے اہم ترین علاقے سے لاک ڈاؤن ختم کر دیا گیا

بنوں (نیوز ڈیسک ) کورونا سے متاثرہ شخص سے ملنے والے تمام آفراد کے ٹیسٹ منفی آ گئے ڈسٹرکٹ پولیس آ فیسر یاسر آفریدی کی ہدایت پر علاقے کا لاک ڈاؤن ختم کیا گیا گزشتہ دنوں کورونا وائرس سے فوت ہونے والے مندیو کے رہائشی مرحوم سید نواز کے ساتھ تمام ملنے والے اُن کے تمام گھر والوںرشتہ داروں کل 9 آفراد سے ٹیسٹ کے نمونے لئے گئے تھے جبکہ اس دوان مندیو کو لاک ڈاؤن کیا گیا تھا ان آفراد میں کورونا وائرس کی تشخیص نہ سکی اور تمام آفراد کے ٹیسٹ منفی آ گئے تمام افراد کا تعلق بنوں علاقہ مندیو سے تھا جو علاقہ پچھلے کئی دنوں سے پولیس نے مکمل لاک ڈاون کیاتھا ڈپٹی کمشنر دفتر سے ٹیسٹ رزلٹ موصول ہوتے ہی ڈی پی لاک ڈاون ختم کیا گیاجبکہ مرحوم سید نواز کے قریبی رشتہ داروں کو گھر خود میں 14 اپریل تک قرنطینہ کرنے کی ہدایت کی گئی اس موقع پر ڈی پی او یاسر آفریدی نے کہا کہ علاقہ کو لاک ڈاون کے موقع پر یہاں کے باشندوں نے بھر تعاون کیا یہ نہ صرف اپنے آ پ کے ساتھ بہت بڑا احسان کیا بلکہ آنے والے صحت مند معاشرے کو بھی پیغام دیا ہے خدا نخواستہ یہ باشندے لاک ڈاون توڑ دیتے تو علاقہ میں تباہی مچا دیتے آج اللہ کا شکر ہے کہ ان کے تعاون سے علاقہ کلیئر قرار دیا گیا ہے ۔دوسری جانب تعدد کرونا وائرس کیسز رپورٹ ہونے کے بعد کراچی کے علاقے کو مکمل طور پر سیل کرنے کا فیصلہ، سول ایوی ایشن کالونی کو مکمل طور پر سیل کر کے قرنطینہ میں تبدیل کر دیا گیا، رہائشیوں کو 14 روز کیلئے گھروں کے اندر رہنے کی ہدایت، علاقے کو مکمل سیل کرنے کے بعد پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے جس کے بعد پولیس کا گشت جاری ہے، علاقے میں جراثیم کش سپرے کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے تا کہ مزید لوگ اس سے متاثر ہونے سے بچ سکیں۔مزید بتایا گیا ہے کہ کراچی کا ایک اور علاقہ ڈسٹرکٹ ملیر قائد آباد اور گلستان سوسائٹی میں 9 کرونا پوزیٹو کیسز سامنے آئے ہیں۔ کیسز سامنے آنے کے بعد قائد آباد سمیت ملحقہ علاقے میں سرکاری و نجی ہسپتالوں میں او پی ڈیز کو فوری طور بند کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔کراچی میں لوکل ٹراسمیشن سے کرونا وائرس کے کیسز سامنے آنے کے بعد اپیل کی گئی ہے کہ عوام سماجی روابط کو انتہائی کم کرتے ہوئے حکومت سندھ کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے اپنے گھروں میں رہیں۔واضح رہے کہ سندھ میں اب تک کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 900 سے تجاوز کرگئی ہے جس میں سب سے زیادہ کیسز کراچی سے رپورٹ ہوئے اور صوبے بھر میں اب تک سب سے زیادہ ہلاکتیں بھی شہر قائد میں ہی سامنے آئی ہیں۔پورے ملک میں سب سے پہلے سندھ میں لاک ڈاؤن کا اعلان کیا گیا تھا جس کے بعد متاثرہ افراد کی تعداد میں کمی بھی نظر آئی تھی۔ جبکہ ابھی تک پاکستان میں کرونا وائرس متاثرہ افراد کی تعداد 3200 سے زیادہ ہو گئی ہے جبکہ اس سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 52 ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں