0

افسوسناک خبر ، پاکستان میں کرونا وائرس سے مزید 2افراد جاں بحق ، متاثرہ مریضوں کی تعدادکتنی ہو گی؟ تشویشناک اطلاعات موصول

اسلام آباد(ویب ڈیسک)پنجاب اور سندھ میں مزید ایک ایک شخص جاں بحق ہوگیا جبکہ 86 نئے کیسز سامنے آئے، سندھ میں تین مریض صحتیاب ہوگئے۔ جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق پاکستان بھر میں کورونا وائرس سے آج مزید 2 افراد جاں بحق ہوئے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 28 ہوگئی جب کہ مزید 86کیسز سامنے آنے کے بعد متاثرہ افراد کی تعداد 2119 تک جا پہنچی ہے۔ملک میں کورونا وائرس سے پنجاب اور سندھ میں ایک ایک ہلاکت ہوئی۔ کورونا وائرس سے بدھ کو پنجاب میں ایک اور ہلاکت ہوئی جس کے بعد صوبے میں وائرس سے جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 10 ہوگئی۔اس کے علاوہ وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے کراچی میں کورونا سے متاثرہ ایک اور ہلاکت کی تصدیق کی۔ان کا کہنا تھا کہ 59 سالہ مریض کا تعلق کراچی سے ہے جسے 19 مارچ کو اسپتال میں داخل کیا گیا تھا جہاں وہ آج انتقال کرگیا۔انہوں نے مزید بتایا کہ جاں بحق ہونے والا مریض حال ہی میں سعودی عرب سے واپس آیا تھا جسے دمہ اور سانس لینے میں تکلیف کا بھی سامنا تھا۔ایک اور ہلاکت کے بعد سندھ میں مہلک وائرس سے جاں بحق افراد کی تعداد 9 ہوگئی ہے۔ منگل کو پاکستان میں کورونا سے 3 ہلاکتیں ہوئی تھیں جن میں سے سندھ میں 2 اور خیبرپختونخوا میں ایک ہلاکت ہوئی۔پاکستان میں اب تک ہونے والی 28 ہلاکتوں میں سے پنجاب میں 10، سندھ 9، خیبرپختونخوا 6، گلگت بلتستان میں 2 اور بلوچستان ایک ہلاکت ہوئی ہے۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق ٓرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ کسی بھی طبقے کو وبا کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑ سکتے،عوام کی حفاظت کیلئے تمام ضروری اقدامات کیے جارہے ہیں۔آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کی خصوصی بریفنگ میں شرکت کی۔ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ قوم اجتماعی کوششوں سے تمام مسائل کو خطرہ بننے سے پہلے حل کرلے گی ، عوام کی حفاظت کے لیے تمام ضروری اقدامات کیے جارہے ہیں، کسی بھی طبقے کو وبا کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑ سکتے۔کورونا وائرس ،جاپان نے پاکستان کو اتنے کروڑ ڈالر امداد فراہم کر دی کہ پاکستانیوں کے چہرے خوشی سے کھل اٹھیں گےانہوں نے کہا کہ ہمیں رنگ و نسل کی تفریق کیے بغیر ایک قوم کی طرح مقابلہ کرنا ہوگا، منصوبے کے تحت تمام اقدامات پر عمل درآمد سے معاشرے کی بہتری کیلئے کام کر سکیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں