چین ہمیشہ انسانی حقوق کے تحفظ کا نظریہ ساز، حامی اور اس پر عمل کرنے والا ملک رہا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے بیالیسویں اجلاس کے دوران، چین کی وزارت خارجہ کے خصوصی نمائندے لیو حوا نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہر فرد کا انسانی حقوق سے لطف اندوز ہونا ناصرف تمام انسانیت کا مشترکہ نظریہ ہے، بلکہ یہ چین کی کمیونسٹ پارٹی کے مقاصد میں سے ایک ہے۔ چین انسانی حقوق کی ترقی کے خصوصی راستے پر گامزن رہے گا کیونکہ چین ہمیشہ سے انسانی حقوق کے تحفظ کا نظریہ ساز، حامی اور اس پر عمل کرنے والا ملک رہا ہے۔

لیو حوا نے کہا کہ رواں سال عوامی جمہوریہ چین کے قیام کی سترویں سالگرہ منائی جارہی ہے۔ گزشتہ سترسالوں میں، چینی کمیونسٹ پارٹی کی مضبوط قیادت میں، چین نے مثالی ترقی کی ہے اور انسانی حقوق کے تحفظ کا ایک شاندار باب بھی رقم کیا ہے۔ اس لئے اقوام متحدہ نے چین کو ” گزشتہ تیس سالوں میں سب سے تیزی سے ترقی کرنے والا ملک” قرار دیا ہے اور عالمی بینک نے چین کی غربت کے خاتمے کو “انسانی غربت کے خاتمے کی تاریخ میں آج تک کی سب سے بڑی کامیابی ” اور “انسانی تاریخ کا سب سے بڑا واقعہ” قرار دیا ہے۔

اب چین میں انسانی حقوق کے قانونی تحفظ کا ایک مکمل نظام تشکیل دیا گیا ہے۔ بین الاقوامی مستند رائے شماری کے مطابق، چین دنیا میں سب سے محفوظ، متحرک اور عوام اطمینان و سکون کے لحاظ سے اعلی ترین ممالک میں سے ایک ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں