0

مہنگائی کو بائے بائے!!!ملک میں مہنگائی کی شرح میں خاطر خواہ کمی۔۔۔وزیراعظم نے مہنگائی کی روک تھام کیلئے اب تک کا بڑا اعلان کر دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)ادارہ شماریات نے مہنگائی کے حوالے سے نئی رپورٹ جاری کردی ،رپورٹ میں کہاہے کہ ملک میں مہنگائی کی شرح میں بتدریج کمی آنا شروع ہو گئی ،ہفتہ وار مہنگائی کی شرح کم ہو کر 15 اعشاریہ 97 فیصد پر آگئی ،گزشتہ ماہ شرح 20 فیصد تک پہنچ گئی تھی ۔ادارہ شماریات کی نئی رپورٹ کے مطابق گزشتہ ایک ہفتے میں 13 اشیائے ضروریہ سستی ہوئیں جبکہ 9 کی قیمتوں میں اضافہ ہوا،ٹماٹر 3 روپے کلو سستے ہوکر قیمت43 روپے کلو ہو گئی ،رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ چینی ،آلو ،گڑ،لہسن ،دال چنا ،مسور اورآٹا بھی سستا ہوا۔یاد رہے کہ رواں مالی سال کے پہلے سات ماہ میں جاری کھاتوں کے خسارے میں گزشتہ سال کےمقابلےمیں 72 فیصد کمی ریکارڈکی گئی، جس کے بعد خسارےکاحجم 2 ارب 65 کروڑ40 لاکھ ڈالر تک جا پہنچا۔ تفصیلات کے مطابق ملک کےمالیاتی کھاتوں میں بہتری کاسلسلہ برقرار ہے، رواں مالی سال کے پہلے سات ماہ میں کرنٹ اکاونٹ خسارے میں نمایاں کمی ہوئی۔ اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری اعدادوشمار میں بتایا گیا رواں مالی سال جولائی تاجنوری جاری کھاتوں کےخسارےکاحجم دوارب پینسٹھ کروڑچالیس لاکھ ڈالررہا، گزشتہ سال کےاسی عرصےمیں جاری کھاتوں کاخسارہ نوارب سینتالیس کروڑنوےلاکھ ڈالرتھا۔اسٹیٹ بینک کے مطابق جنوری میں کرنٹ اکاونٹ خسارےکاحجم پچپن کروڑپچاس لاکھ ڈالررہاجو گزشتہ سال کےاسی عرصےمیں چھیاسی کروڑپچاس کروڑڈالرتھا تاہم دسمبر 2019 کے مقابلے میں جاری کھاتوں کاخسارہ کافی بڑھاہے۔ اعدادوشمار میں بتایا گیا جاری کھاتوں کےخسارےمیں کمی کی وجہ درآمدات میں نمایاں کمی اوربرآمدات میں اضافہ ہے، جولائی تاجنوری درآمدات میں بیس فیصدکمی اوربرآمدات میں دواعشاریہ دوفیصدکااضافہ ریکارڈ کیا گیا جبکہ ترسیلات زرمیں چاراعشاریہ ایک فیصدکا اضافہ ہوا ہے۔ یاد رہے گذشتہ ماہ ملک کے رواں کھاتوں کے خسارے میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی تھی ، جولائی تادسمبرجاری کھاتوں کاخسارہ2ارب 15 کروڑ ڈالر رہ گیا تھا جبکہ گزشتہ مالی سال میں یہ خسارہ 8 ارب 61 کروڑ ڈالر سے زائد تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں