0

وزیراعظم کے اپنے ہی دوستوں نے انہیں شدید ذہنی دباوٴ کا شکار کر دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )بغاوت کا خوف، وزیراعظم اپنے ہی دوستوں سے شدید پریشان، تفصیلات کے مطابق ایک نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے انکشاف کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان انکے ساتھیوں کے بارے میں ایک رپورٹ دی گئی ہے جسکی وجہ سے وہ شدید ذہنی دباؤ کا شکار ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وزیراعظم کو بتایا گیا ہے کہ انکے چند قریبی ساتھی انکے ساتھ ڈبل گیم کررہے ہیں۔واضع رہے کہ اس سے قبل چوہدری شجاعت نے عمران خان کو کامیابی کے لئے تین مشورے دے دیئے تھے۔ چوہدری شجاعت حسین نے کہا تھا کہ وزیراعظم کو مشورے دیتے ہوئے کہا کہ عمران خان سے پہلے چاپلوسوں اور چغل خوروں سے دور رہیں۔ شجاعت حسین کی جانب سے دیئے جانے والے دوسرے مشورے میں کہا گیا تھا کہ وزیراعظم اپنے اردگرد منافقوں کی نشاندہی کریں۔اس کے ساتھ ساتھ تیسرامشورہ دیتے ہوئے شجاعت حسین نے کہا تھا کہ وزیراعظم عمران خاناپنی ذات میں خود پسندی نہ آنے دیں۔ غیر رسمی گفتگو میں چوہدری شجاعت نے کہا تھا کہ میں نے نوازشریف کو بھی مشورے دیئے تھے لیکن انہوں نے برعکس کام کیا۔ اس وقت نوازشریف کی چاپلوسی کرنے والی آج بھی اقتدار میں شامل ہیں۔ ایک مشورہ میں نے پرویز مشرف کو بھی دیا تھا ، میں نے کہا تھا کہ مدرسے کا لفظ طالبان کے ساتھ نہ جوڑوں، تاہم انہوں نے بھی نہیں مانی۔عمران خان کی نیت نیک ہیں اسی لئے وہ وزیراعظم کے منصب پر پہنچے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اللہ تعالیٰ نے مجھے مشکل وقت سے نکال کر صحتیابی دی۔ عمرہ سے واپسی پر گفتگوکرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین نے کہا تھا کہ میں نے عمرہ کے دوران مقامِ ابراہیم کے سامنے سب سے پہلے الله تعالیٰ کے حضور شکرانے کے نوافل ادا کئے کہ الله تعالیٰ مجھے اپنے گھر دوبارہ آنے کا موقع دیا، وہ تین ماہ تک جرمنی میں زیر علاج رہے اور ایک ماہ آئی سی یو میں رہے لوگوں نے ان کی بیماری کے متعلق بہت سی افواہیں پھیلائیں، لوگ بڑی تعداد میں دور دراز علاقوں سے ان سے ملنے آتے تھے، 80فیصد لوگوں کومجھ سے ملنے کی اجازت بھی نہیں تھی اور ان میں کچھ لوگ ایسے بھی تھے جنہیں وہ جانتے تک نہیں تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں