0

کبڈی ورلڈ کپ کے بعد انٹرنیشنل شوٹنگ ورلڈ کپ کا بھارت میں انعقاد ، پاکستان کی ٹیم اس ایونٹ میں شرکت کرے گی یا نہیں ؟ فیصلہ ہو گیا

نئی دہلی (ویب ڈیسک) پاکستان بھارت میں عالمی شوٹنگ چیمپئن شپ سے دستبردار ہو گیا ہے۔ بھارتی میڈیا نے پاکستان نیشنل رائفل شوٹنگ ایسوسی ایشن کے ایگزیکٹو نائب صدر جاوید لودھی کے حوالے سے رپورٹ کیا ہے کہ تین شوٹر اولمپکس کیلئے کوالیفائی کرچکے ہیں۔ ہم انہیں ٹریننگ کے لئے جرمنی بھیجیں گے،جس کوچ سے رابطہ ہوا ہے وہ مارچ میں دستیاب ہونگے، اس لیے ٹریننگ چھوڑ کر عالمی کپ میں ٹیم بھیجنے کا کوئی مطلب نہیں ہے۔ دریں اثنا منتظمین نے اعلان کیا ہے کہ چین نے کورونا وائرس کے سبب میگا ایونٹ میں شرکت سے معذرت کرلی ہے۔ عالمی کپ مارچ میں بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں ہوگی۔یاد رہے کہ بھارت سے کرکٹ ورلڈکپ 2023 کی میزبانی چھن جانے کا امکان، اگلے 10 سال کیلئے کسی بھی آئی سی سی ایونٹس کی میزبانی کرنے پر بھی پابندی لگا دی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی کرکٹ بورڈ اور آئی سی سی کے درمیان تنازعہ پیدا ہو گیا جس کے باعث بھارت سے ناصرف 2023 کرکٹ ورلڈکپ کی میزبانی چھن سکتی ہے، بلکہ اگلے 10 سال کیلئے آئی سی سی ایونٹس کی میزبانی پر پابندی بھی لگنے کا امکان ہے۔بتایا گیا ہے کہ آئی سی سی قوانین کے تحت جب بھی کسی ملک میں آئی سی سی ایونٹس کا انعقاد کیا جاتا ہے، تو اس ملک کی حکومت آئی سی سی کو باقاعدہ ٹیکس چھوٹ دیتی ہے۔ تاہم بھارت کی حکومت ایسا کرنے کیلئے تیار نہیں۔ اس تمام صورتحال میں آئی سی سی نے واضح کر دیا ہے کہ اگر بی سی سی آئی اپنے حکومت سے آئی سی سی ایونٹس کیلئے ٹیکس چھوٹ کی سہولت حاصل نہ کر سکا، تو اس صورت میں ناصرف 2023 ورلڈکپ کی میزبانی کسی اور ملک کو دے دی جائے گی، بلکہ اس کے علاوہ اگلے 10 سال کیلئے بھی بھارت کسی آئی سی سی ایونٹ کی میزبانی نہیں کر سکے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں