0

ایسے ہی تو چین پوری دنیا پر نہیں چھا گیا : چینیوں نے کرونا وائرس کے خوف کی ایسی کی تیسی پھیر دی، بی بی سی کی رپورٹ پڑھ کر آپ بھی عش عش کر اٹھیں گے

شنگھائی(ویب ڈیسک) چین میں کورونا وائرس بحران کے نتیجے میں اس کے شہری تو گھروں تک محدود ہو کر رہ گئے لیکن تعمیراتی کاموں میں حصہ لینے والی گاڑیوں اور دیگر مشینری کے کمالات کو لوگوں میں ہیروز کا درجہ مل چکا ہے۔ یہ وہ گاڑیاں اور مشینری ہے جن کی مدد سے چین کےصوبہ ہوبائی کے شہر ووہان میں دو نئے ہسپتال تعمیر کیے جا چکے ہیں۔۔ملک کے سبھی حصوں میں چونکہ وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لوگوں کو گھروں تک محدود رہنے کی ہدایت کی گئی تھی اور تاکید کی گئی تھی کہ صرف اشد ضرورت کے تحت ہی باہر نکلا جائے۔ اس دوران جؤچین کی حکومت نے اپنی عوام کو لمحہ با لمحہ باخبر رکھا اور ان کی توجہ دونوں ہسپتالوں کی تعمیر کی براہ ِ راست نشریات کی جانب مبذول کر لی ۔ تاکہ تفریحی مواقع کے حصول کے لیے انہیں درپیش مشکلات سے نکالا جائے۔ ووہان میں ہوشینشان ہسپتال کی تعمیر دو فروری جبکہ لیشینشان ہسپتال کی تعمیر پانچ فروری کو مکمل ہوئی تھی۔ ایسے میں میڈیا کے ذریعے نا صرف یہ شہری پوری طرح باخبر رہے بلکہ انھوں نے تعمیراتی مشینوں کو کرداروں کے نام بھی دے دیے ۔چین کے سرکاری چینل سی سی ٹی وی نے لوگوں کو ہسپتالوں کی تعمیر براہ راست دکھانے میں خصوصی کردار ادا کیا جس کا انھیں غیر معمولی ردِعمل ملا۔اخبار گلوبل ٹائمز کے مطابق اس لائیو سٹریم کو چار کروڑ سے زائد افراد نے دیکھا ہے۔ان ویڈیوز کی مقبولیت بیرونِ ملک بھی بہت زیادہ دیکھنے میں آئی ہے۔ یوٹیوب اور پیریسکوپ جیسے براہ راست نشریات دکھانے والی ویب سائٹس کے ذریعے بیرونِ ملک صارفین کو یہ مناظر دکھانے کا انتظام بھی کیا گیا جن سے مستقل بنیادوں پر ویڈیو پر ہزاروں ویوز آ رہے ہیں۔ان ویڈیوز کی مقبولیت کے باعث ہوشینشان ہسپتال کی تعمیر پر کام کرنے والی مشینوں کو غیر معمولی شہرت حاصل ہو گئی ہے۔سیمنٹ مکسرز کو ’دی سیمنٹ کنگ‘، ‘عظیم الشان سفید خرگوش’ اور ‘سفید رولر’ جیسے القابات سے نوازا جا رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں