0

کیماڑی پورٹ پر زہر پھیلنے کا واقعہ : وفاقی وزیر جہاز رانی علی زیدی امریکی جہاز کا دفاع کیوں کر رہے ہیں جان کر آپ حیران رہ جائیں گے۔

کراچی(ویب ڈیسک ) کیماڑی میں مبینہ زہریلی گیس پھیلنے سے جاں بحق ہونے والے افراد کے خون کے نمونوں میں سویابین ڈسٹ کا انکشاف ہوا ہے۔ ہلاک افراد کے خون کے نمونوں کی جانچ پڑتال مکمل کر لی گئی ہے جس کے بعد ریسرچ انسٹیٹیوٹ آف کمیسٹری ڈیپارٹمنٹ جامعہ کراچی نے رپورٹ تیار کرلی ہےجاں بحق افراد کے خون کے نمونوں میں سویابین ڈسٹ کا انکشاف ہوا ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سویابین ڈسٹ کا مسئلہ 2 سال قبل اسپین میں ہوا تھا جہاں متعدد افراد متاثر ہوئے تھے۔جامعہ کراچی نے رپورٹ تیار کرکے کمشنر کراچی کو ارسال کردی ہے جبکہ واقعے پر سرکاری سطح پر ابھی کوئی واضح اور حتمی رپورٹ نہیں دی گئی۔دوسری جانب وفاقی وزیر برائے پور ٹ اینڈ شپنگ علی زیدی نے کہا ہے کہ زہریلی گیس ہرکولیس نامی جہاز سے نہیں آرہی کیونکہ اگر گیس سویا بین ڈسٹ کے باعث خارج ہو رہی ہوتی تو سب سے پہلے اس جہاز کے عملے کو متاثر کرتی ۔یاد رہے کہ ترجمان شارق فاروقی کا کہنا ہے کہ زہر یلی گیس کی موجودگی کی تحقیقات ہورہی ہیں ، اس سلسلےمیں متاثرہ علاقے کے لوگوں کےخون کے نمونے کے علاوہ علاقے کے پینے کے پانی ، سیوریج کے پانی اور وہاں سے گزرنے والے گندے نالے کے بھی نمونےلیکر ماہرین تحقیقات کررہے ہیں۔جس کی رپورٹ ایک روز میں آجائے گی جبکہ متاثرین کو کراچی پورٹ ٹرسٹ کی جانب سے ہر قسم کی سہولت فراہم کی جارہی ہے ، کےپی ٹی اسپتال میں متاثر ین کا مفت علاج کیا جارہا ہے ۔ کل شام سے کیماڑی میں زہریلی گیس کے اخراج سے 2 خواتین سمیت 8 افرادہلاک ہوئے تھے، کراچی پورٹ ٹرسٹ اور ماہرین کی ٹیم کی مسلسل کوشش کے بعد زہر یلی گیس کی ’’بو‘‘ کے حوالےسے کوئی سراغ نہیں مل سکا جبکہ وفاقی وزیر علی زیدی نے کراچی پورٹ ٹرسٹ کی برتھوں کا دورہ کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں