0

پوری دُنیا میں ’گرین پاسپورٹ ‘کو عزت مل گئی۔۔۔! وہ کام جو سابقہ ادوار میں نہ ہوسکا عمران خان کی حکومت میں ہوگیا، پاکستانیوں کے لیے بڑی خبرآگئی

اسلام آباد( نیوز ڈیسک ) رواں سال کے پہلے 40 روز، 90 ہزار پاکستانیوں نے بیرون ملک ملازمت حاصل کرلی،وزارتِ اوورسیز پاکستانیز و ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ نے 90 ہزار پاکستانیوں عالمی لیبر مارکیٹس کے مختلف شعبوں میں ملازمت حاصل کرنے میں مدد فراہم کی ہے۔بیورو آف ایمیگریشن اینڈ اوورسیز پاکستانیز (بی ای او ای) کےمطابق یہ 2020 کا ایک اچھا آغاز ہے اور ہم ملازمت دلوانے کے اپنے ہدف 750000 کو پورا کرنے کیلئے پر امید ہیں۔بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے بھیجی گئی ترسیلات زر سے ملکی معیشت کو استحکام ملے گا اور ملک کے مالیاتی ذخائر میں اضافہ ہوگا۔بی ای او ای کے نمائندے کے مطابق گزشتہ دو برسوں میں انسانی وسائل کی برآمد میں 63 فی صد اضافہ دیکھا گیا ہے، گزشتہ برس 625,203 پاکستانی مختلف شعبوں میں ملازمت کے لیے بیرون ملک گئے جب کہ 2018 میں یہ تعداد محض 382,439 تھی، اسی طرح ترسیلات زر سے متعلق سٹیٹ بینک کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 2019-2020 کی پہلی ششماہی کے دوران ترسیلاتِ زر کا حجم 11.4 ارب ڈالر ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا، ممکن ہے حکومت بیرونی ترسیلات زر کا متعین کردہ 24 ارب ڈالر کا ہدف موجودہ مالی سال کے دوران ہی حاصل کرلے گی۔حکومت بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی حوصلہ افزائی کیلئے متعدد منصوبوں پر کام کررہی ہے جس کے تحت بیرون ملک پاکستانیوں کو ایئر ٹکٹوں میں رعایت سمیت، متعین شدہ وزن سے زیادہ سامان لانے، دو موبائل فون لانے کی اجازت ہوگی۔ اس کے ساتھ ساتھ بیرون ملک مقیم ۔پاکستانیوں کے خاندانوں کو پاکستان میں یوٹیلٹی سٹورز پر کھانے پینے کی اشیا پر خصوصی پیکیجز بھی فراہم کیے جا سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں