0

مولانا فضل الرحمٰن چوہدری پرویز الٰہی سے ناراض ۔۔۔کچھ روز بعد ملکی سیاست میں کیا ہلچل مچنے والی ہے ؟ تازہ ترین خبرآگئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) مسلم لیگ(ن) کے سینئر نائب صدر، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن (ن) لیگ سے نہیں چودھری پرویزالٰہی سے ناراض ہیں جنہوں نے وعدے پورے نہیں کئے ، جے یو آئی کے سربراہ سیاسی طاقت ثابت کرچکے ، دوبارہ احتجاج یا حکومت مخالف تحریک کی کال دی تو (ن) لیگ ساتھ دے گی، ان ہائوس تبدیلی کی کھچڑی پک رہی ہے لیکن یہ لاحاصل مشق ہوگی، مسائل کا حل نئے شفاف انتخابات ہیں ،مجھے پورا یقین ہے کہ عوام درست فیصلہ کریں گے ،روزنامہ دنیاسے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نے کہاکہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت ایماندار،صاف کردار کے مالک رہنمائوں پر مشتمل ہے ، نوازشریف،احسن اقبال،رانا ثنااللہ،سعد رفیق سمیت مجھ پر کرپشن کا کوئی الزام ثابت نہیں کیا جاسکا ،نیب ریفرنس صرف اپوزیشن رہنمائوں کیخلاف دائرکئے گئے ہیں جس کا مقصد وفادار قیادت کو ہراساں کرنا ہے ،شاہدخاقان عباسی نے کہاکہ پہلا ریفرنس46ارب روپے کا ہے جبکہ نئے ریفرنس میں صرف 13کروڑ کی مالی بے ضابطگی کاالزام ہے ، پہلا ریفرنس بھگت رہا ہوں دوسرا بھی بھگت لوں گا ، یقین سے کہتا ہوں کہ میرے خلاف کرپشن کاکوئی الزام ثابت نہیں ہوسکے گا۔انہوں نے کہاکہ ایم ڈی،پی ایس او کی تعیناتی میں بطوروفاقی وزیرمیرا کوئی کردارنہیں، بورڈ سلیکشن کرتا ہے ، وزارت پٹرولیم کی بنیادپرریفرنس دائر نہیں ہوسکتا اسی بنیادپرراجہ پرویزاشرف کی رہائی عمل میں آچکی ہے لیکن میرے خلاف نیب ریفرنس دائرکردیا گیا جوبدنیتی پرمبنی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ان ہائوس تبدیلی سے نظام چلے گا اورنہ ہی مسائل حل ہونگے ۔ملکی معیشت جس قدربگڑچکی ہے اسے درست سمت پر ڈالنے کیلئے کئی سال درکارہونگے ۔ اس مقصد کیلئے ملک میں نئے انتخابات ناگزیر ہیں ،موجودہ حکمران انتقام کی آگ میں اندھے ہوگئے ہیں۔ ذہنی اذیت دینے کیلئے خواجہ سعدرفیق کوروزانہ لاہور سے اسلام آباد لایاجاتا ہے ۔ اسمبلی اجلاس رات نو بجے ختم ہونے پر واپس لاہور لے جا یا جاتا ہے .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں