0

نعیم الحق ایک خواہش اپنے دامن میں لیے قبر میں چلے گے۔۔۔وزیراعظم عمران خان کو کس نے کیا کہہ دیا ؟ جان کر آپ کی آنکھیں نم ہو جائیں گی

لاہور(ویب ڈیسک)ہارون رشید نے انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان شہباز گل سے ناراض تھے۔ نعیم الحق نے آخری دنوں میں وزیراعظم عمران خان کو مسیج کیا کہ وہ ان سے ملنا چاہتے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان انکے پاس پہنچے تو نعیم الحق نے وزیراعظم عمران خان سے کہا کہ شہباز گل کو معاف کردیں۔ہارون رشید نے مزید کہا کہ نعیم الحق نے وزیراعظم سے درخواست دی کہ انہیں کوئی عہدہ دیدیں اور وہ وزارت اطلاعات میں فرائض سرانجام دیں کیونکہ عمران خان کی میڈیا ٹیم بکھر چکی تھی۔ہارون رشید کا مزید کہنا تھا کہ قاسم سوری اور گل حمید انہیں چھوڑنے کیلئے گئے تو کافی دیر تک روتے رہے جب تک جہاز نظر آتا رہا اور نعیم الحق کا بیٹاامان الحق انکی کرسی دھکیل کر لے گیا۔ انکے بیٹے اور بیٹی علاج کیلئے لندن لے جانا چاہتے تھے لیکن نعیم الحق جانا نہیں چاہتے تھے انکی خواہش تھی کہ اسلام آباد میں ہی انکی تدفین ہو۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید کا کہنا تھا کہ قاسم سوری اور گل حمید نعیم الحق کو ائیر پورٹ پر چھوڑنے کیلئے گئے تو وہاں کافی دیر تک روتے رہے جب تک جہاز نظر آتا رہا اور نعیم الحق کا کا بیٹا امان الحق ان کی کرسی کو دھکیل کر لے گیا ۔ ہارون الرشید نے انکشاف کیا ہے کہ عمران خان شہباز گل سے ناراض تھے ، نعیم الحق نے وزیراعظم کو میسج کیا کہ وہ ان سے ملنا چاہتے ہیں ۔ان کا مزید کہنا تھاکہ وزیراعظم عمران خان ملاقات کیلئے نعیم الحق کے پاس گئے تو انہوں نے عمران خان سے کہا کہ شہباز گل کو معاف کر دیں ۔ نعیم الحق نے وزیراعظم سے درخواست کی شہباز گل کو معاف کر کے کوئی عہدہ دیں اور وہ وزارت اطلاعات میں فرائض سر انجام دیں کیونکہ عمران خان کی میڈیا ٹیم اس وقت بکھر چکی تھی ۔ انکے بیٹے اور بیٹی علاج کیلئے لندن لے جانا چاہتے تھے لیکن نعیم الحق جانا نہیں چاہتے تھے۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں