0

نیب کے شریف خاندان کی ملکیتی کمپنیوں کے دفاتر پر چھاپے، وجہ کیابنی ؟ ن لیگیوں کیلئے تشویشناک خبر آگئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)نیب حکام کی جانب سے شریف خاندان کی ملکیتی کمپنیوں کے دفاتر پر چھاپے مارے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق چھاپا سلمان شہباز اور محمد عثمان کے دفتر پر مارا گیا، شریف فیملی کے دفاتر سے کمپیوٹرز، لیپ ٹاپ دیگرریکارڈ قبضے میں لیا گیا ہے۔ نیب کے انٹیلی جنس ونگ، سی آئی ٹی ونگ ٹو اور دیگر نے اسٹنٹ ڈائریکٹر حامد جاوید کی سربراہی میں چھاپامارا۔ذرائع کے مطابق شریف گروپ آف انڈسٹریز کے سی ایف اوکے دفتر سے اہم دستاویزات قبضہ میں لی گئیں ہیں۔نیب کو شریف فیملی کی بے نامی کمپنی یونی ٹاس، وقار ٹریڈنگ دیگر سے متعلق ریکارڈ مطلوب ہیں، نیب کو 55 کے سے متعلقہ ریکارڈ نہیں ملا۔پارٹی ترجمان مریم اورنگزیب نے نیب کے چھاپوں کی تصدیق کر دی ہے۔مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ نیب حکام نے ماڈل ٹاؤن میں 55 کے اور 91 ایف پر واقع دفاتر پر دوپہر ساڑھے 12 بجے کے قریب چھاپے مارےہیں۔ترجمان کا کہنا ہے کہ نیب والےکچھ نہیں بتاتے دفاتر سےکمپیوٹر اٹھا کر لے جاتے ہیں اورچھاپے سے پہلے نوٹس نہیں دیتے۔انہوں نے کہا کہ نیب 18ماہ میں کسی کیس میں کرپشن ثابت نہیں کرسکا۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ نیب کے چھاپے جہانگیر ترین، خسرو بختیار کی ملوں سےتوجہ ہٹانے کی کوشش ہے ۔انہوں نے کہا چھاپہ جہانگیر ترین اور خسرو بختیار کی ملوں پر مارنا چاہیے تھا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں