48

معروف سرکاری میڈیکل یونیورسٹی کی طالبہ نےپروفیسر پر ہراساں کرنے کا الزام عائد کر دیا

لاہور(نیوز ڈیسک)کنگ ایڈورڈ یونیورسٹی کی طالبہ کا پروفیسر پر ہراساں کرنے کا الزام، پی ایچ ڈی سکالر بشری بشیر نے پروفیسر نقشب چودھری کے خلاف درخواست دے دی، وائس چانسلر کے ای یو نے معاملہ پر تین رکنی فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی تشکیل دے دی۔لاہور کےنجی ٹی وی کے مطابق کنگ ایڈورڈ یونیورسٹی میں زیر تعلیم طالبہ نے اپنی درخواست میں الزام عائد کیا ہے کہ پروفیسر نقشب چودھری لیب میں سرچ ورک سے زبردستی روک رہے ہیں اور لیب سےنگہت یاسمین کےساتھ ملکرمیرا ڈیٹا چوری کیا جا رہا ہے،جس وجہ سے میرا مستقبل تباہ ہونے کا خدشہ ہے۔طالبہ کی جانب سےمطالبہ کیاگیاہے کہ میرے اوپر ذہنی دباو بڑھایا جا رہا ہے،اس وجہ سے میرا مستقبل تاریک ہو رہا ہے۔اس حوالے سے وائس چانسلرکنگ ایڈورڈ یونیورسٹی نے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئےکہا ہے کہ اس معاملہ پر تین رکنی فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی تشکیل دے دی ہے جو جلد ہی اپنے نتائج پیش کرے گی،کمیٹی کی رپورٹ پر حقائق کے مطابق فیصلہ کیا جائے گا اور ذمہ داران کو سزا دی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں