1لاکھ 97ہزار آسامیاں خالی!! فوری طور پر سرکاری ملازمین کی بھرتیاں کرنے فیصلہ۔۔۔ بےروزگار نوجوانوں کیلئے بڑی خوشخبری، ہدایات جاری کردی گئیں

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیراعظم آفس نے تمام وزارتوں اور ڈویژنوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اضافی گاڑیاں،اضافی آلات اور ناکارہ مشینری 90روز میں نیلام کر دیں۔ نجی اخبار کو دستیاب دستاویز کے مطابق وزیر اعظم آفس کی جانب سے تمام وزارتوں اور ڈویژنوں کو اپنے پرانے ریکارڈ اورناکارہ مشینری کی آکشن کی ہدایت جاری کی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ آکشن کا عمل 90روز میں مکمل کیا جائے ۔وزارتوں اور ڈویژنوں کو پرانا فرنیچر ، پرانی فائلیں، آلات، ناکارہ مشینری، گاڑیا ں اور دیگر سامان پروسیجر کے مطابق آکشن کیا جائے ۔ ذرائع کے مطابق کسٹم کے پاس سینکڑوں ضبط شدہ گاڑیا ں موجود ہیں اور ان سے اربوں روپے حاصل کئے جا سکتے ہیں۔ خط میں اداروں کو کہا گیا ہے کہ ای اینڈ ڈی کے رولز کے تحت زیر التواء انکوائریز کو تین ماہ میں مکمل کیا جائے ۔وزیراعظم ڈیلیوری یونٹ کو بھرتیوں کیلئے دو ماہ میں رولز بنانے کی ہدایت بھی کی گئی ہے ۔ ایک سال سے زائد عرصہ سے خالی آسامیوں پر بھی بھرتی کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ خالی آسامیوں پر 45روز میں بھرتیاں کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ وزیراعظم ڈیلیوری یونٹ کی جانب سے طویل عرصہ سے زیر التواء ترقیوں کے کیسز کو بھی نمٹانے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ اسکے علاوہ وزارتوں اور ڈویژنوں میں خالی آسامیوں پر بھرتیاں کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ ان تمام آسامیوں پر حکومتی طریقہ کار کے تحت چار ماہ میں بھرتیوں کے عمل کو مکمل کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ادھر وفاقی وزارتوں، ڈویژنوں اور خودمختار ونیم خودمختاراداروں اور کارپوریشنوں میں ایک لاکھ 97ہزار 388منظور شدہ اسامیاں خالی ہیں۔ وزارتوں اور ڈویژنوں میں81479اور خودمختار ونیم خودمختا راداروں ایک لاکھ15ہزار909اسامیاں خالی ہیں ،کل 9لاکھ 91ہزار 20ملازمین کام کر رہے ہیں۔ سندھ رورل کے ملازمین کی تعداد کوٹے سے 30433اور بلوچستان کے ملازمین کی تعدادکوٹے سے 14972کم ہے ۔ اسی طرح پنجاب کے ملازمین کی تعداد کوٹے سے 10003اور خیبرپختونخواکے ملازمین کی تعداد کوٹے سے 96582اور سندھ شہری ملازمین کی تعداد کوٹے سے 13093زیادہ ہے ۔اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی سرکاری ملازمین کے اعدادوشمار کی رپورٹ 2018-19 کے مطابق وفاقی وزارتوں اور ڈویژنوں میں اسوقت کل 6لاکھ 63ہزار234اسامیاں ہیں جن پر 5لاکھ 81ہزار 755ملازمین کام کر رہے ہیں جبکہ 81ہزار 479اسامیاں خالی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق پنجاب اور اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے ملازمین کی تعداد 500515ہے ۔پنجاب اور اسلام آباد کا کوٹہ50فیصدہے ۔ اسی طرح خیبرپختونخوا سے تعلق رکھنے والے ملازمین کی تعداد 209330ہے ۔ سندھ کے کل ملازمین کی تعداد 169054ہے جن میں سے شہری سندھ کے ملازمین کی تعداد87ہزار651ہے ۔ بلوچستان کا نوکریوں میں کوٹہ 6فیصد ہے ، بلوچستان کے ملازمین کی تعداد 43889 ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں