کیا جہانگیر ترین کو مذاکراتی کمیٹی سے عمران خان نے نکالا ؟ پول کھل گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما جہانگیر ترین کا کہنا ہے کہ انہیں مذاکراتی کمیٹی سے نکالا نہیں گیا بلکہ ایک ہفتے کیلئے باہر کیا گیا تھا، ان کا عمران خان کے ساتھ اعتماد کا رشتہ قائم ہے۔نجی ٹی وی سماءکے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ ق لیگ کو کوئی پیشکش نہیں کی، ق لیگ مرکز میں کوئی وزارت نہیں مانگ رہی، اتحادی ایک دوسرے سے لیڈ لیتے ہیں ، اتحادیوں کا سیاسی مستقبل حکومت کے ساتھ جڑا ہے، پنجاب حکومت کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ کراچی ہمارا شہر ہے اس کی ترقی کیلئے بڑا پیکج ملنا چاہیے، ایم کیو ایم کے ساتھ 90 فیصد معاملات طے ہوچکے تھے، مجھے کمیٹی سے نکالا نہیں گیا بلکہ ایک ہفتے کیلئے باہر کیا گیا تھا، عمران خان کا میرے ساتھ اعتماد کا رشتہ آج بھی برقرار ہے، وہ کسی بھی کمیٹی کیلئے پلیئرز خود منتخب کرتے ہیں۔مسلم لیگ ن کے حوالے سے جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ ن لیگ کا لیڈر نواز شریف ہے ، شہباز شریف نہیں ، شہباز شریف مسلم لیگ ن کو متحد نہیں رکھ سکتے۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے 20 ہزار ٹن چینی یوٹیلٹی سٹورز کو سستے داموں دینے کا اعلان کردیا۔نجی ٹی وی سماءکے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ ان کی اس وقت 6 شوگر ملز ہیں اور ان کے پاس شوگر مارکیٹ کا 20 فیصد شیئر موجود ہے، ان کی شوگر ملز حکومت میں آنے سے پہلے کی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ شوگر ملز ایسوسی ایشن نے 70 روپے فی کلو کے حساب سے ایک لاکھ ٹن چینی یوٹیلٹی سٹورز کو دینے کا اعلان کیا ہے، وہ اپنے حصے کی 20 ہزار ٹن چینی دینے کیلئے تیار ہیں۔پروگرام کے میزبان ندیم ملک نے کہا کہ چینی بحران شروع ہونے سے پہلے اس کی قیمت 67 سے 68 روپے تھی ، آپ بڑے آدمی ہیں اس لیے 2 سے 3 روپے مزید کم کردیں ۔ندیم ملک کی درخواست پر رہنما تحریک انصاف جہانگیر ترین نے کہا کہ وہ ایک لاکھ ٹن میں سے اپنے حصے کی 20 ہزار ٹن چینی یوٹیلٹی سٹورز کو 67 روپے کے حساب سے دینے کیلئے تیار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں