0

ترکی کے باہمی اشتراک سے پاکستان دنیا میں کیا بن کر ابھرنے والا ہے؟ بنی گالا میں جشن کا سماں ، وزیراعظم عمران خان نے ترک صدر کے دورہ پاکستان سے پہلے ہی بڑی خبر بریک کر دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مختلف شعبوں میں تعاون کو فروغ دینے میں ترک صدر کا دورہ اہم سنگ میل ہوگا،کوشش ہے دو طرفہ خصوصاًمعاشی تعلقات کو مزید مستحکم کیا جائے ۔میڈیارپورٹس کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ترک صدر کے دورہ پاکستان سے متعلق اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا،اجلاس میں وفاقی وزیر حماداظہر،مشیر خزانہ،مشیرتجارت اور متعلقہ وزارتوں کے افسران شریک ہوئے،اجلاس میں ترک صدر کے دورے کے دوران دو طرفہ تعلقات و تعاون کو فروغ دینے پرتبادلہ خیال ہوا۔وزیراعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے برادارانہ تعلقات تاریخی اہمیت کے حامل ہیں ، دونوں ممالک مشکل کی ہر گھڑی میں شانہ بشانہ کھڑے رہے ہیں،وزیراعظم نے کہا کہ ترکی کامسئلہ کشمیر پر پاکستان کے اصولی موقف کی حمایت لائق تحسین ہے،کوشش ہے دو طرفہ خصوصاًمعاشی تعلقات کو مزید مستحکم کیا جائے ،وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مختلف شعبوں میں تعاون کو فروغ دینے میں ترک صدر کا دورہ اہم سنگ میل ہوگا۔وزیراعظم نے وفاقی وزیرحماداظہرکو معاہدوں پر پیش رفت کو یقینی بنانے کی ذمہ داری سونپ دی،وزیراعظم نے ہدایت کی کہ پیش رفت کا جائزہ لینے کےلئے ہر ماہ اجلاس منعقد کیا جائے۔جبکہ دوسی جانب ایک خبر کے مطابق صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ آٹا بحران کے ذمہ داروں کی چھٹی ہونی چاہئے۔تفصیلات کے مطابق صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ آٹا بحران پر میرے بیان کی غلط تشریح کی گئی، آٹا بحران کے ذمہ داروں کی چھٹی ہونی چاہئے، حکومت کو مافیا سے نمٹنے کے لیے ہمت کرنا ہوگی۔انہوں نے کہا کہ بجلی اور دیگر چیزوں سے سبسڈی ختم کرنے کی وجہ سے مہنگائی بڑھی، آئی ٹی سیکٹر میں برآمدات بڑھنے کا امکان زیادہ ہے، برآمدات میں 2 فیصد گروتھ بڑھ گئی۔صدر مملکت نے کہا کہ 2 سال میں 22 لاکھ لوگوں کا بے روزگار ہونا تشویشناک ہے، مافیاز ساری حکومتوں میں موجود ہوتی ہے، بحران میں مافیاز کو کنٹرول کرنے کا زیادہ موقع ہوتا ہے، میرا خیال ہے کہ حکومت معاملات سنبھال لے گی۔عارف علوی نے کہا کہ پارلیمنٹ کے اندر تمام جماعتوں کے ساتھ تعاون بڑھانا چاہئے، پارلیمنٹ کے ہر سیشن پر عوام کا بہت پیسہ لگتا ہے، پارلیمنٹ کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔صدر مملکت نے کہا کہ حکومت مشکل وقت سے نکل جائے گی، حکومت کو مافیا سے نمٹنے کے لیے ہمت کرنا ہوگی۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف وعدہ کرکے گئے ہیں انہیں واپس آنا چاہئے، نواز شریف کا علاج مریم نواز کے بغیر بھی ممکن ہے۔واضح رہے کہ اس سے قبل وزیر اعظم عمران خان نے مہنگائی میں کمی سے متعلق ایک اجلاس میں کہا تھا کہ عوامی ریلیف کے لیے حکومت ہر حد تک جائے گی، غریب عوام کی تکالیف پر حکومت خاموش تماشائی نہیں بن سکتی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں