یا اللہ رحم ۔۔۔۔ چین میں کرونا وائرس کی تباہی کے بعد پاکستان میں کونسے مرض نے جنم لے لیا؟ خوفناک تباہی سے بچنے کے لیے حکومت پاکستان نے الرٹ جاری کر دیا

کوئٹہ (نیوز ڈیسک)بلوچستان میں کینسر کے مریضوں میں اضافہ ہونے لگا ،بی ایم سی ہسپتال میں روزانہ کی بنیاد پر 20 سے زائد مریضوں کی کیموتھراپی کی جاتی ہے۔بولان میڈیکل کمپلیکس ہسپتال کے سربراہ کینسر وارڈ ڈاکٹر زاہد محمود نے کہا ہے کہ بلوچستان میں کینسر کے مرض میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے،انہوں نے کہا کہ بی ایم سی ہسپتال سالانہ7 ہزار کینسر کے مریضوں کا علاج کرتا ہے۔ڈاکٹر زاہد محمود نے کہا کہ صوبے بھر میں کینسر کے علاج کے لیے طبی سہولیات کا فقدان ہے جبکہ بی ایم سی ہسپتال میں روزانہ کی بنیاد پر 20 سے زائد مریضوں کی کیموتھراپی کی جاتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہسپتال میں کینسر وارڈ کا بجٹ انتہائی کم ہے اور ہسپتال میں مشینری بھی دستیاب نہیں ہے۔جبکہ دوسری جانب ایک خبرکے مطابق سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو زیر گردش ہے جس کے بارے میں یہ دعویٰ کیا جارہا ہے کہ چین نے کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے خنزیروں کو زندہ جلا کر دفن کردیا ہے۔اس ویڈیو کا جائزہ لیا جائے تو یہ کرونا وائرس شروع ہونے سے بھی تقریباً ایک سال پہلے کی ہے جو پہلے بھی سوشل میڈیا پر مختلف اوقات کے دوران وائرل ہوتی رہی ہے۔ یو ٹیوب پر یہ ویڈیو 11 جنوری 2019 کو اپ لوڈ کی گئی تھی لیکن دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر یہ اس سے بھی پہلے سامنے آئی تھی۔انڈیا ٹوڈے کے مطابق 85 سیکنڈ کی یہ ویڈیو پہلی بار 26 دسمبر 2018 کو ’چائنیز سٹیزن‘ نام کے فیس بک پیج پر اپ لوڈ کی گئی تھی۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک بڑے گڑھے میں متعدد خنزیروں کو ڈالا گیا ہے اور ان کے اوپر آتش گیر مادہ چھڑک کر انہیں آگ لگادی گئی ہے۔انڈیا ٹوڈے کا کہنا ہے کہ یہ ویڈیو اس وقت بنائی گئی تھی جب 2018 میں ’افریقن سوائن فیور‘ پھیلا تھا، چین نے اسی سے نمٹنے کیلئے خنزیروں کو تلف کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں