اسحاق ڈار کی رہائش گاہ کو پناہ گاہ بنانے کے فیصلے کے خلاف عدالت سے اسٹے جاری ہوا یا نہیں ؟ تازہ ترین خبرآگئی

لاہور(ویب ڈیسک)وزیراعظم کے معاونِ خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبرنے کہا ہے کہ اسحٰق ڈار کی رہائش گاہ کو پناہ گاہ بنانے کےخلاف کوئی حکمِ امتناع نہیں ملا، اگر کوئی عدالتی حکم آیا تو فیصلے کے مطابق عمل درآمد کیاجائے گا ۔وزیراعظم کے معاونِ خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبرنے گلبرگ لاہور میں اسحٰق ڈار کی رہائش گاہ پربنائی گئی پناہ گاہ کا دورہ کیا اور میڈیا سے گفتگوبھی کی۔ان کا کہنا تھا کہ اسحاق ڈار 2017ء سےمفرور ہیں، ایک سال کی عدالتی کارروائی کے بعد گھر کو حکومت کی نگرانی میں دیا گیا، اطلاع ملی ہے کہ پناہ گاہ بنائےجانے کے خلاف حکم امتناع جاری ہوا ہے، فیصلہ ملنے پرہی عمل درآمد کیا جائےگا۔مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کی ضمانتوں کے متعلق شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ ضمانت ملنے کا یہ مطلب نہیں کہ کوئی بری ہو گیا ،حمزہ شہبازکی ایک کیس میں ضمانت ہوئی ہے، مریم نوازکوباہر نہیں جانے دیا جائےگا، ان کے خاندان سے ریکوری بھی پوری کی جائے گی۔شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ عمران خان ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کو نہیں چھوڑیں گے، جبکہ قیمتیں نیچے لانے کے لیے سبسڈی بھی دیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں