0

وزیراعظم عمران خان کا ایک اور خواب پورا پاکستان اور ایران کے درمیان ایسا تعلق قائم ہو گیا کہ پوری دنیا حیران رہ گئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) ایران پر امریکی پابندیوں کی وجہ سے پاکستان نے ایران کے ساتھ کاروبار مبادلہ (بارٹر ٹریڈ) شروع کرنے پر غور کا آغاز کر دیا ہے ، وزارت تجارت کے ذرائع کے مطابق وزارت نے ایران کے ساتھ آزاد تجارت معاہدے کے بارے میں بات چیت کی ہے ، اس کیلئے ایک تیکنیکی کمیٹی بھی تشکیل دی گئی ہے ۔آزادانہ تجارتی معاہدہ کے بعد دونوں ممالک کے درمیان ایک دوسرے کی مارکیٹوں تک رسائی میں مدد ملے گی۔ایران پر امریکی پابندیوں کی وجہ سے وزارت تجارت ایران کے ساتھ باٹر ٹریڈ کا طریقہ کار شروع کرنے پر غور کر رہی ہے ۔ اس مقصد کیلئے پاکستان نے طریقہ کار مبادلہ کے ابتدائی خاکہ پر اپنی آرا اور نقطہ نظر کے بارے میں ایران کے ساتھ تبادلہ خیال کیا ۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے دعوی کیا ہے کہ امریکا کی 1979 سے مسلسل اقتصادی پابندیوں کے باوجود ایرانی فضائیہ بہت مضبوط ہے۔ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی کے مطابق رہبرِ اعلی نے فضائیہ کے کمانڈروں اور عملہ کے ایک اجتماع سے خطاب میں کہا کہ انقلاب کے بعد سے ان (امریکیوں)کا مقصد یہ رہا ہے کہ ہمارے پاس ایک مضبوط فضائیہ نہ ہو لیکن اب وہ ہماری طرف دیکھیں۔ہم نے طیارے تک بنا لیے ہیں۔ہم نے ان کے دبا ئوکو موقع میں تبدیل کردیا ہے۔علی خامنہ ای نے کہاکہ ہمیں اتنا مضبوط ہونا چاہیے کہ ہم اپنے دشمنوں کی سازشوں کو ناکامی سے دوچار کرسکیں،خطاب۔ ایرانی قوم کے خلاف ان کی سازشیں ناکامی سے ہی دوچار ہوں گی۔ایران اس وقت 1979 میں برپا شدہ انقلاب کی اکتالیسویں سالگرہ منا رہا ہے۔اس عوامی انقلاب کے نتیجے میں امریکا کے حمایت یافتہ رضا شاہ پہلوی کے اقتدار کا خاتمہ ہوگیا تھا۔ایران یہ کہتا چلا آرہا ہے کہ وہ مغربی ممالک کے بڑھتے ہوئے دبا کے باوجود اپنی فوج کو مضبوط بنائے گا۔مغربی طاقتیں ایران کے بیلسٹک پروگرام سمیت فوجی صلاحیتوں کومحدود کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں