مرچوں کے ذریعے ہارٹ اٹیک کا خطرہ کم کرنے کا طریقہ سائنسدانوں نے بتادیا

روم(نیوز ڈیسک) ہمارے پاکستانی کھانے مرچ کے بغیر مکمل ہونے کا کوئی تصور ہی نہیں۔ اب سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں مرچوں کا ایک ایسا فائدہ بھی بتا دیا ہے کہ سن کر پاکستانی خوش ہو جائیں گے۔ میل آن لائن کے مطابق اٹلی کے سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ جو لوگ ہفتے میں چار مرتبہ سرخ مرچ کھاتے ہیں ان کو ہارٹ اٹیک آنے کا خطرہ 40فیصد کم ہو جاتا ہے، خواہ ان کی خوراک کیسی بھی ہو، صحت مندانہ ہو یا غیرصحت مندانہ۔رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے اس تحقیق میں8سال تک 23ہزار لوگوں کی مرچیں کھانے کی عادت اور ان کی صحت پر مرچوں کے اثرات کا تجزیہ کیا اور رپورٹ مرتب کی۔ نتائج میں انہوں نے بتایا کہ ”ہفتے میں چار بار سرخ مرچیں کھانے والوں کو نہ صرف ہارٹ اٹیک کا 40فیصد کم خطرہ ہوتا ہے بلکہ ایسے لوگوں کی قبل از موت ہونے کا خطرہ بھی بہت کم ہو جاتا ہے۔ “اٹلی کے شہر پوزیلی میں واقع انسٹیٹیوٹ نیورولوجکو میڈیٹرینیو نیورومیڈ کے سائنسدانوں نے اس کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ ”سرخ مرچوں میں ایک اینٹی انفلیمیٹری کمپاؤنڈ پایا جاتا ہے جو جلن کا احساس پیدا کرتا ہے۔ یہی وہ کمپاؤنڈ ہے جو دل کے عارضے اور دیگر خطرناک امراض سے انسانوں کو بچاتا ہے۔ “اس تحقیق میں ایک یہ انکشاف بھی ہوا کہ جو لوگ باقاعدگی سے سرخ مرچ کھاتے ہیں وہ پھل اور سبزیاں کم کھاتے ہیں اور انہیں بیماریاں بھی کم لاحق ہوتی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں