واٹس ایپ صارفین کے لیے خوشخبری … اچانک بڑی تبد یلیاں‌کر دی گئیں‌،جانئے

نیویارک(ویب ڈیسک )واٹس ایپ نے گزشتہ ماہ ڈارک موڈ فیچر کو اینڈرائیڈ بیٹا ورڑن میں متعارف کرادیا تھا جس کا وعدہ اس نے 2018 میں کیا تھا اور صارفین کو بھی اس کا شدت سے انتظار ہے۔اور اب ڈارک موڈ کے حوالے سے واٹس ایپ میں ایک اور اپ ڈیٹ کرتے ہوئے اس میں ڈارک سولڈ وال پیپرز کا اضافہ کردیا گیا ہے جو کہ ابھی تمام صارفین کو دستیاب ہے۔یہ بات واٹس ایپ میں اپ ڈیٹس پر نظر رکھنے والی ویب سائٹ نے ایک رپورٹ میں بتائی اس اپ ڈیٹ سے صارفین چیٹ وال پیپرز میں چھ نئے ڈارک رنگوں کو وال پیپر کے طور پر استعمال کرسکیں گے۔اس نئے اضافے سے ڈارک موڈ کو زیادہ بہتر بنانے میں مدد مل سکے گی کیونکہ اگر ڈارک موڈ کے ساتھ ہلکے رنگوں کے وال پیپر ان ایبل ہوں تو اسکرین کی روشنی برائٹ ہی رہتی ہے اور ڈارک تھیم کا کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔گہرے رنگوں کے وال پیپرز سے ڈارک موڈ میں واٹس ایپ چیٹس زیادہ بہتر نظر آئیں گی۔ویسے تو یہ فیچر اب بھی تمام صارفین کو دستیاب ہے مگر اس میں یہ نئے 6 گہرے رنگ موجود نہیں۔مزید پڑھئیے :: بیجنگ(ویب ڈیسک ) چین میں حکام نے کورونا وائرس کی وبا بڑے پیمانے پر پھیلنے کے بعد دوسرے ممالک سے چہرے کو ڈھانپنے کے لیے ماسک مہیا کرنے کی اپیل کی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق اس صوبے میں صرف میڈیکل سٹاف کے لیے پانچ لاکھ تک ماسک درکار ہیں۔ ڈاکٹروں کے مشورے کے مطابق اس ماسک کو باقاعدگی سے تبدیل کرنے کی بھی ضرورت ہے یعنی طبی عملے کے لیے دن میں تقریباً چار مرتبہ ایسا کرنا ضروری ہے۔اس طرح مجموعی طور پر طبی عملے کو ایک دن میں 40 لاکھ تک ماسک درکار ہیں۔چین میں پبلک ٹرانسپورٹ میں کام کرنے والے عملے کے پانچ لاکھ ارکان کو ماسک استعمال کرنے کی ہدایت کی گئی ہے،یہ اطلاعات بھی ہیں کہ بعض دکانداروں اور تاجروں نے اپنے گاہکوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ ان کی دکان میں ماسک پہن کر آئیں،عام حالات میں چین میں ہر روز تقریباً دو کروڑ ماسک بنائے جاتے ہیں۔ جو کہ دنیا بھر میں بنائے جانے والے ماسک کا لگ بھگ نصف ہے۔چین کی وزارت صنعت کے اعداد و شمار کے مطابق میں اس وقت روزانہ اعلیٰ معیار کے چھ لاکھ ماسک تیار کیے جا رہے ہیں۔مزید پڑھئیے :: ریاض(ویب ڈیسک ) سعودی دارالحکومت ریاض میں واقع عفیف ہسپتال کے عملے کی اس وقت جان پر بن گئی جب ریاض کے گورنر شہزادہ فیصل بن بندر بغیر کسی اطلاع کے اچانک ہسپتال کے دورے پر پہنچ گئے اورہسپتال کی بدانتظامی اور مریضوں کی مناسب دیکھ بھال نہ ہونے پر انتظامیہ پر سخت الفاظ کے ساتھ برس پڑے۔ گورنر ریاض شہزادہ فیصل بن بندر اچانک عفیف ہسپتال پہنچ گئے۔جب انہوں نے ہسپتال کی بُری حالت دیکھی تو انتظامیہ کی خوب کلاس لی۔ دورے کے دوران گورنر ریاض نے ہدایت جاری کی کہ عفیف ہسپتال کی حالت اچھی نہیں۔ عوام کا خیال رکھنا پڑے گا۔ واضح رہے کہ شہزادہ فیصل بن بندران دنوں ریاض گورنریٹ کی کمشنریوں کے دورے کررہے ہیں۔ عفیف ہسپتال کسی پروگرام کے بغیر پہنچے تھے۔گورنر ریاض نے ہسپتال کی انتظامیہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ’ ہسپتال میں جو کچھ دیکھا وہ سعودی قیادت کو کسی بھی صورت اچھا نہیں لگے گا‘۔یاد رہے کہ شہزادہ فیصل بن بندر نے عفیف اور الدوادمی کا دورہ کرکے دونوں کمشنریوں میں آباد شہریوں کی ضرورتوں پر بات چیت کی ہے۔ انہوں نے پہلے سے عوامی ضروریات کے حوالے سے تیار شدہ سکیموں کے نظام الاوقات پر بھی تبادلہ خیال کیا۔واضح رہے کہ مملکت بھر میں کرونا وائرس کے ممکنہ پھیلاؤ سے نمٹنے کے لیے طبی مراکز میں خصوصی انتظامات کیے جا رہے ہیں ۔جن کی نگرانی کے لیے اعلیٰ حکام بھی میدان میں آ چکے ہیں۔ گورنر ریاض کا عفیف ہسپتال کا دورہ بھی اسی سلسلے کی کڑی تھی۔ سعودی مملکت میں کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے موثر اقدامات لیے جا رہے ہیں۔ اس حوالے سے تمام ایئر پورٹس پر آنے والے مسافروں کی سکریننگ کی جا رہی ہے۔جمعرات کے دِن چین کے وزٹ کے بعد سعودی عرب پہنچنے والی دو بھارتی خواتین کو کرونا وائرس کے شبے میں الگ کر دیا گیا ہے اور طبی عملے کے سوا انہیں کسی دوسرے شخص سے عارضی طور پر ملنے سے روک دیا گیا تھا۔چین سے آنے والی دو بھارتی حقیقی بہنوں کو دمام میں شاہ فہد بین الاقوامی ہوائی اڈے پر روکا گیا جس کے بعد انہیں طبی معائنے کے لیے دوسرے مسافروں سے الگ تھلگ کر دیا گیا تھا۔وزارت صحت نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ دونوں بہنیں گذشتہ 12 جنوری کو چین گئیں اور تقریبا 21 دن وہاں مقیم رہیں۔ وہ اس عرصے کے دوران چین میں قیام پذیر رہیں جب پورا ملک مہلک کرونا وائرس کی لپیٹ میں تھا۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دونوں بھارتی خواتین چین میں اپنے قیام کے دوران وائرس کے مرکز ووہان شہر نہیں گئیں اور نہ ہی ان میں کرونا کی بیماری کی کوئی علامت پائی گئی ہے تاہم انہیں احتیاطی تدابیر کے طور پر دوسرے مسافروں سے الگ کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں