300 کروڑ کمانے والی فلم ، پروڈیوسر، فنانسر اور معروف بھارتی اداکار مصیبت میں پھنس گئے، انکم ٹیکس کا چھاپہ، 77 کروڑ برآمد کرلیے

چنائی (نیوز ڈیسک) بھارت کے انکم ٹیکس ڈیپارٹمنٹ نے ساؤتھ انڈین فلم ’بگل‘ کے خلاف تحقیقات کا آغاز کردیا ہے، فلم کے فنانسر کے خفیہ ٹھکانوں پر چھاپوں کے دوران 77 کروڑ روپے کی رقم برآمد ہوئی ہے، فلم کے ہیرو ’وجے‘ کے گھر بھی چھاپہ مارا گیا لیکن وہاں سے نقدی برآمد نہیں ہوئی، انکم ٹیکس حکام فلم کے پروڈیوسر، فنانسر اور اداکار سے بلیک منی کے حوالے سے تحقیقات کر رہے ہیں۔بھارتی میڈیا کے مطابق 2019 میں ریلیز ہونے والی فلم ’بِگل‘ نے دنیا بھر میں باکس آفس پر 300 کروڑ روپے کا بزنس کیا تھا۔ فلم کی ریلیز کے 4 ماہ بعد انکم ٹیکس حکام نے فلم کے پروڈیوسر، اداکار اور فنانسر سے پوچھ گچھ کی ہے۔5 فروری کو انکم ٹیکس حکام نے اے جی ایس انٹر پرائزز پر چھاپہ مارا، یہ وہ کمپنی تھی جس نے اداکار وجے کی فلم بگل کیلئے 180 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی تھی۔ مبینہ طور پر فلم کے فنانسر امبو چیزیان نے یہ سارا پیسہ اے جی ایس انٹرپرائزز کو فلم بنانے کیلئے ادھار دیا تھا۔انکم ٹیکس ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے جاری پریس ریلیز کے مطابق چنائی اور مدورائی میں چھاپوں کے دوران خفیہ جگہوں پر چھپائے گئے 77 کروڑ روپے برآمد کیے گئے ہیں، یہ رقم فلم کے فنانسر کی ملکیت ہے۔اداکار وجے سے سوالات کرنے کے بعد فنانسر کے 38 ٹھکانوں پر چھاپوں کے دوران یہ رقم برآمد کی گئی ہے۔ابتدائی طور پر 77 کروڑ روپے کی نقدی اور جائیدادوں کے کاغذات، بینک چیکس سمیت دیگر قیمتی اشیا بھی برآمد کی گئی ہیں، ممکنہ طور پر برآمد ہونے والی رقم 300 کروڑ روپے تک پہنچ سکتی ہے۔ انکم ٹیکس حکام نے واضح کیا ہے کہ ’بگل‘ فلم کے ہیرو ’وجے‘ کے گھر سے کوئی نقدی برآمد نہیں ہوئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں