وہ پہلا عرب ملک جس نے اپنے شہریوں کے چین جانے پر پابندی عائد کردی،اورحیران کن سزاکابھی اعلان کر دیا

ریاض(نیوز ڈیسک)سعودی عرب نے اپنے شہریوں کے چین جانے پر پابندی عائد کردی ہے، پابندی کااطلاق چین میں پھیلے خطرناک کرونا وائرس کی وجہ سے کیا گیاہے۔سعودی حکام نے پابندی توڑنے والے سعودی شہریوں کے سخت احتساب اور غیر سعودی باشندوں کو واپس سعودی عرب میں داخلے کی اجازت نہ دینے جیسی سزاوں کا بھی اعلان کیاہے۔برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز نے سعودی پریس ایجنسی کے حوالے سے بتایا ہے کہ سعودی عرب نے مملکت میں موجود تمام سعودی و غیر سعودی شہریوں کے چین جانے پر پابندی عائد کردی ہے۔سعودی پریس ایجنسی کے مطابق جو شہری اس قانون کو توڑنے کے مرتکب ہوں گے ان کیخلاف کارروائی کی جائے گی۔اور اگر کوئی غیر سعودی مملکت سے چین گیاتو اس کو واپس مملکت میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔یاد رہے اس سے قبل محکمہ پاسپورٹ نے نئی سفری پابندیوں کااعلان کیا ہے۔سعودی حکومت کی جانب سے جاری کی گئی ہدایت میں مسافروں سے کہا گیاہے کہ ’ اگر وہ مملکت آنے سے 15روز قبل تک چین میں قیام پذیر رہے ہیں تو ایئرپورٹ ، سی پورٹ یا بری سرحدی چوکی پہنچنے پر امیگریشن حکام کو اس حوالے سے آگاہ کریں‘۔ سعودی محکمہ پاسپورٹ کے مطابق ’یہ پابندی کورونا کے نئے وائرس سے بچاوکیلئے حفاظتی تدابیر کے تحت لگائی گئی ہے۔ اس کی پابندی سعودی عرب آنے والے تمام مسافروں کو کرنا ہوگی۔ کسی کواستثنیٰ نہیں‘۔سعودی وزارت صحت نے اس سے قبل امراض سے بچاو اور انسداد کے قومی مرکز کے تعاون سے کرونا کے نئے وائرس کے سدباب کے لیے سخت احتیاطی تدابیر مقرر کی تھیں۔ سعودی عرب نے ہوائی اڈوں ، بندرگاہوں اور بری سرحدی چوکیوں پر کرونا وائرس کا پتہ لگانے اور متاثرین کے علاج کے لیے خصوصی سینٹر زبھی قائم کئے ہیں۔چین سے مملکت پہنچنے والوں کا طبی معائنہ کیا جارہاہے۔کسی بھی مسافر پرشبے کی صورت میں بھی طبی معائنہ کیا جارہاہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں