مسئلہ کشمیرکی سنگینی کااحساس دلانے کیلئے امریکی صدر کو کتنی بار سمجھایا؟وزیراعظم عمران خان نے خود ہی بتادیا

مظفرآباد(نیوز ڈیسک)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عالمی برادری کے بھارت میں مالی مفادات ہیں اس لئے انہیں مسئلہ کشمیر آسانی سے سمجھ نہیں آتا۔عمران خان نے کہا کہ انہیں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو مسئلہ کشمیر کی سنگینی کا احساس دلانے کیلئے تین بار سمجھانا پڑا۔ عمران خان نے کہا انہوں نے جرمن چانسلر اینگلا مرکل اور کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کو بھی مسئلہ کشمیرکی حساسیت کااحساس دلایا جس کے مثبت نتائج سامنے آئے۔آزادکشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے دنیا کو مسئلہ کشمیر کا حل سمجھانے کاطریقہ بھی بتایا۔انہوں نے کہاکہ اس کا حل یہ ہے کہ مغربی میڈیا کو سمجھایا جائے کہ بھارت ایک بار پھر نازی ہٹلر کے دور والی حرکتیں کررہاہے۔انہوں نے کہا انہوں نے اس طریقے کو بھی اپنایا ہے، انہوں نے واشنگٹن پوسٹ اور دیگر عالمی جرائد و نشریاتی اداروں کو مسئلہ کشمیر کی حساسیت سے آگاہ کیاہے اس ضمن میں انہوں نے آرٹیکل بھی لکھے جو واشنگٹن پوسٹ میں شائع ہوئے،اکانومسٹ نے بھار ت میں بڑھتی شدت پسندی پر خصوصی سرورق شائع کئے۔انہوں نے کہا ایسا ستر سال میں پہلی بار ہورہا ہے کہ مغربی میڈیا پاکستان کو سن رہا ہے اور بھارتی اقدامات پر تشویش کااظہارکررہاہے۔عمران خان نے کہا کہ مودی نے گیارہ دن میں پاکستان پر قبضے کی بات کی ہے جو کہ ایک سربراہ مملکت کی شان کے خلاف ہے، انہوں نے کہا انڈین آرمی چیف آزاد کشمیر میں گھسنے کے دعوے کررہے ہیں ۔ عمران خان نے کہا ایسے دعوے گھبرائے ہوئے لوگ کرتے ہیں اور اس وقت بھارتی مکمل طور پر گھبرائے ہوئے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ ہم نے بھارت کو کوئی موقع نہیں دینا۔ عمران خان نے کہا پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ عالمی میڈیا کی حمایت پاکستان کو حاصل ہے ماضی میں ہمیشہ یہ بھارت کی حمایت میں رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں