پاکستانی اسٹارز جگمگانے کو تیار، آج بھارت سے ٹاکرا، کرکٹ شائقین کیلئے کھیل کے میدان سے اہم خبر آگئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)انڈر19 کرکٹ ورلڈ کپ میں پاکستانی لٹل اسٹارز جگمگانے کو تیار ہیں، قومی جونیئر ٹیم آج روایتی حریف بھارت کیخلاف سیمی فائنل میں میدان سنبھالے گی۔آئی سی سی انڈر19 ورلڈ کپ میں منگل کو پاکستان اور بھارت پہلے سیمی فائنل میں مدمقابل آرہے ہیں، یہ مرحلہ عبور کرنیو الی ٹیم9 فروری کو شیڈول فائنل میں رسائی حاصل کر پائے گی، اس سے قبل دونوں ٹیمیں متعدد بارآئی سی سی انڈر19ورلڈکپ جیت چکی ہیں۔پاکستان انڈر 19 کرکٹ ٹیم نے یہ کارنامہ 2 مرتبہ (2004 اور 2006 میں) انجام دے رکھا ہے جبکہ دفاعی چیمپئن بھارت اس سے قبل 4 مرتبہ ٹائٹل قبضے میں کرچکا ہے، دونوں ٹیمیں اس سے قبل 2006 ایڈیشن کے فائنل میں نبردآزما ہوچکی ہیں، اس تاریخی میچ میں پاکستان نے 109 رنزپرمشتمل کم ہدف کا دفاع کرتے ہوئے حریف ٹیم کو 71 رنز پر ڈھیر کرکے شکست سے دوچارکیا تھا، اس وقت پاکستانی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد تھے، انور علی اور عماد وسیم بھی چیمپئن سائیڈ کا حصہ رہے تھے۔دوسری جانب بھارتی ٹیم میں روہت ، رویندرا جڈیجا ،چتیشور پجارا اور پیوش چاؤلہ جیسے معروف پلیئرز موجود تھے، آئی سی سی انڈر 19 ورلڈکپ میں پاکستان اور بھارت کی ٹیمیں 9 مرتبہ ایک دوسرے کے مدمقابل آچکی ہیں، جہاں کامیابی5مرتبہ پاکستان جبکہ 4مرتبہ بھارت کے نام رہی، پاکستان اور بھارت کی ٹیموں کے درمیان آخری 4 میچز میں 3 بھارت اور 1 پاکستان نے جیتا ہے، اس سے قبل بھی دونوں ٹیمیں گذشتہ ایڈیشن کے سیمی فائنل میں ٹکرائی تھیں جہاں بھارت نے فتح حاصل کی تھی، رواں ایڈیشن میں پاکستان نے تاحال بیٹنگ اور بولنگ ، دونوں شعبوں میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔گروپ میچز میں اسکاٹ لینڈ کو 75 رنز پر ڈھیر کرنے والی پاکستانی بولنگ لائن اپ نے دوسرے سیمی فائنل میں رسائی حاصل کرنے والی بنگلہ دیش کی ٹیم کے 9 کھلاڑیوں کو محض 106 رنز پر پویلین واپس بھجوا دیا تھا، دونوں ٹیموں کے درمیان میچ بارش کے باعث مکمل نہیں ہوسکا تھا۔ایونٹ کے کوارٹرفائنل میں بھی پاکستان نے افغانستان کو 189 پرمحدود کرکے کامیابی حاصل کی تھی، بیٹنگ کے شعبے میں بھی پاکستان کی کارکردگی متاثرکن رہی ہے۔زمبابوے کیخلاف 73 رنز پر ابتدائی 3 وکٹیں گرنے کے باوجود پاکستان انڈر19 ٹیم 294 رنز کا ہدف مقرر کرنے میں کامیاب رہی تھی۔افغانستان کے مضبوط بولنگ اٹیک کے باوجود قومی انڈر 19 ٹیم نے 190 رنز کا ہدف محض 4 وکٹوں کے نقصان پر حاصل کیا تھا، ایونٹ کے 4 میچزمیں 9 وکٹیں حاصل کرکے آل راؤنڈر عباس آفریدی تاحال پاکستان کے سب سے کامیاب بولر ہیں، عامر خان اور طاہر حسین بالترتیب 2 اور 4 میچزمیں7،7 وکٹیں اڑاچکے ہیں۔بیٹنگ کے شعبے میں محمد حارث 110 رنز بناکر اب تک ایونٹ میں پاکستان کے سب سے کامیاب بیٹسمین ہیں، زمبابوے کیخلاف 81 ان کا بہترین انفرادی اسکور ہے، حالیہ ڈومیسٹک سیزن اور اے سی سی ایمرجنگ ٹیمزایشیا کپ کے سیمی فائنل میں سنچری اسکورکرنے والے حیدرعلی تاحال ایونٹ میں متاثرکن کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کرسکے تاہم انھیں امید ہے کہ وہ سیمی فائنل میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے۔قومی انڈر 19 کرکٹ ٹیم کے اوپنرحیدر علی کا کہنا ہے کہ افغانستان کیخلاف مثبت آغاز سے میرے اعتماد میں اضافہ ہوا ہے، بھارت کیخلاف بڑی اننگز کھیلنے کی کوشش کروں گا، ہردن نیا ہوتا ہے اور سیمی فائنل کے لیے میدان میں اترنے سے قبل کسی دباؤ کا شکار نہیں ہوں، انھوں نے کہا کہ سابق کرکٹرز افغانستان کیخلاف میری بیٹنگ کو سراہ رہے ہیں جس سے میری خوداعتمادی بڑھ رہی ہے۔حیدر علی نے مزید کہا کہ میں نے اے سی سی ایمرجنگ ٹیمز ایشیا کپ میں بھارت کے خلاف 45 رنز کی اننگز کھیلی تھی، سیمی فائنل میں بطور اوپنر ٹیم کی جیت میں کردار ادا کرنے کی کوشش کروں گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں