0

کرونا وائرس کا سب سے بڑا نقصان ۔۔۔۔عالمی معیشت کا کیا حشر نشر ہونے والا ہے ؟ حیران کن خبرآگئی

لاہور(ویب ڈیسک) دنیا کی دوسری بڑی اقتصادی طاقت چین میں کورونا وائرس کی وبا عالمی معیشت کے لیے شدید خطرے کا باعث بن رہی ہےاور عالمی مالیاتی منڈیوں کو خطرات لاحق ہوتے دکھائی دے رہے ہیں ۔ جرمن نشریاتی ادارے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایسا امکان ہے ،سارس وائرس کے پھیلاؤ کےوقت عالمی اقتصادیات کو جن خطرات کا سامنا ہوا تھا، اس نئے وائرس سے وہ خطرات کہیں زیادہ ہو سکتے ہیں۔عالمی اقتصادی صورت حال پر نگاہ رکھنے والے بین الاقوامی ادارے اکانومسٹ انٹیلی جنس یونٹ کی سینئر اہلکار اگاتھا ڈیماریس کا کہنا ہے کہ مالیاتی منڈیوں کو سردست جس خطرے کا سامنا ہے ، وہ چند روزہ بھی ہو سکتا ہے اور یہ صورت حال اس وقت سنگین بھی ہوسکتی ہے جب سرمایہ کاروں کو مجموعی حالات کے بے قابو ہونے کا اندیشہ لاحق ہو گا۔چین دنیا کی دوسری بڑی معیشت رکھتا ہے اور ایک طرح سے اپنی بڑی آبادی اور پیداواری صلاحیت کے تناظر میں اسے ’’دنیا کی فیکٹری‘‘ بھی قرار دیا جاتا ہے ۔ عالمی تجارت میں چینی مصنوعات کا ایک اہم کردار ہے اور عالمی سپلائی میں بھی یہی مصنوعات انتہائی اہم خیال کی جاتی ہیں تاہم وائرس سے یہ سپلائی شدید طور پر متاثر ہوئی ہے ۔ عالمی اقتصادی ماہرین ابھی اندازہ لگانے میں مصروف ہیں کہ مجموعی معاشی نقصانات کتنے گہرے ہو سکتے ہیں۔وائرس کے مسلسل پھیلنے سے چین کی مجموعی شرح پیداوار کے متاثر ہونے کے قوی امکانات ظاہر ہونا شروع گئے ہیں ۔ چینی اکیڈمی برائے سوشل سائنسز سے وابستہ ماہر اقتصادیات ژانگ مِنگ کا کہنا ہے کہ رواں برس کی پہلی سہ ماہی میں یہ پیداوار ایک سے پانج فیصد تک کم یا اس بھی زیادہ ہو سکتی ہے ۔ چینی شہروں میں پچیس جنوری سے شروع ہونے والے نئے قمری سال کے آغاز پر طلب اور رسد میں واضح فرق پیدا ہو چکا ہے ۔عالمی سپلائی کے متاثر ہونے کا بھی امکان جنم لے چکا ہے کیونکہ چینی قمری سال کے موقع پر بند ہونے والی فیکٹریوں اور کارخانوں کی بندش طویل ہو سکتی ہے کیونکہ ابھی تک چین ہی کے اندر کورونا وائرس کی افزائش کو محدود کرنا مشکل دکھائی دے رہا ہے ۔ امریکا سمیت کئی بین الاقوامی اداروں کو اپنی مصنوعات کی تیاریوں میں مشکلات کا سامنا ہے ۔ امریکی کمپنی ایپل نے اگلی سہ ماہی میں اپنے پیداواری صلاحیت کے تسلسل میں غیریقینی کا اظہار کیا ہے ۔ اسی طرح امریکی کار ساز ادارے ٹیسلا کو بھی پیداوار میں سست روی کا سامنا ہے ۔ ٹیسلا نے چینی شہر شنگھائی میں کار سازی کا کارخانہ حال ہی میں کھولا ہے ۔ اِس فیکٹری کو مشکلات کا سامنا یقینی ہے کیونکہ کار سازی کے بعض پرزوں کی پروڈکشن ووہان میں قائم دو فیکٹریوں میں کی جاتی ہے ۔ووہان ہی میں کورونا وائرس کی نئی قسم کا جنم ہوا ہے ۔ اور اس وقت یہ شہر پوری طرح حکومتی نگرانی میں ہے اور بقیہ چین سے کٹ کر رہ گیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں