دو بیویوں والے بینظیر سپورٹ پروگرام سے امداد لیتے رہے۔۔۔ افسروں نے غریب عوام کے پیسوں کو کیسے کیسے لوٹا؟ افسوسناک انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے کم ترقی یافتہ علاقہ جات میں بتایا گیا کہ دو بیویوں والے بھی بینظیر سپورٹ پروگرام سے امداد لیتے رہے، 2080 افسروں نے انگوٹھا لگا کر پیسے لیے ، ایک افسر کاکہنا تھا کہ بیوی کے کرتوت کا علم نہیں تھا ۔سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے کم ترقی یافتہ علاقہ جات نے بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام میں خالی 2067 اسامیوں پر فوری بھرتی کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام کے موبائل پر جعلی پیغامات کے حوالے سے وزیراعظم کوآگاہ کیاجائے اور ملوث عناصر کوسخت سے سخت سزا دی جائے تاکہ آئندہ کوئی غربیوں کولوٹنے کاسوچ بھی نہ سکے ،سیکرٹری احساس پروگرام نے کمیٹی کوبتایاکہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے غربت ختم نہیں ہوگی اس کیلئے ووکیشنل ٹریننگ کی ضرورت ہے جو ہمارے دائرہ اختیارمیں نہیں ،پاکستان میں غربت سروے 2020کے آخر میں مکمل ہوگا ،کمیٹی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹرعثمان کاکڑکی سربراہی میں پارلیمنٹ ہائوس میں ہوا۔ سیکرٹری سوشل پروٹیکشن اینڈ پاورٹی ایلیویشن ڈو یژن نے کہابے نظیرانکم سپورٹ کے گریڈ 14کے 34ملازمین کو نوٹس د ئیے ہیں ، 6ملازمین جو گریڈ 17کے ہیں کو نوٹس دیا گیا جن میں سے 4کو فارغ کردیا گیا ، اس کے ساتھ دیگر محکموں کے نام ہم نہیں شائع کریں گے ان کافیصلہ متعلقہ صوبہ اور محکمہ کرے گا ، ممبران کمیٹی کے سوال پر حکام نے بتایاکہ دو بیویوں والے بھی اس سے مستفید ہوئے ،دونوں بیویوں بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے پیسے لئے ، بے نظیرانکم سپورٹ سے فائدہ حاصل کرنے والے افسران کی تعداد زیادہ ہے مگر 2080 سرکاری افسران نے انگوٹھا لگاکر پیسے لئے ہیں اور چیف سیکرٹریز کو لکھ دیا ہے ، پیسے لینے والے ڈی آئی خان کے افسر نے کہاکہ مجھے بیوی کے کرتوت کا علم نہیں تھا، بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے 8 لاکھ 20 ہزار 165 لوگوں کو نکالا گیاہے ان میں ایک بھی سیاسی بنیاد پر نہیں نکالا گیا ، بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام سے ابھی اس وقت 43 لاکھ افراد مستفید ہو رہے ہیں ان میں کسی سرکاری ملازم کو نہیں چھوڑا ، پورے پاکستان سے لوگ نکالے گئے ہیں ، یکم فروری کو بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام میں75ہزار مزید لوگ شامل کریں گے ، بے نظیر انکم سپورٹ میں 2067 سیٹیں خالی ہیں جبکہ کل 4136اسامیاں ہیں ،ہم اپنا بجٹ غریبوں پر خرچ کرنا چاہتے ہیں ، ہمارا کام چل رہاہے ،بلوچستان میں تھوڑے سے مسائل ہیں ، چیئرمین کمیٹی نے ہدایت کی کہ2067اسامیوں پر جلد بھرتی کی جائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں