0

“جینز کے بعد سکول کالجز اور یونیورسٹیوں میں طالبات پر ایک اور اہم ترین پابندی عائد دی گئی

کوٹلی(ویب ڈیسک) کوٹلی یونیورسٹی آزاد کشمیر میں طالبات کے لپ سٹک لگانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے،پابندی کا فیصلہ یونیورسٹی کے شعبہ ایجوکیشن کی جانب سے کیا گیا ہے۔جیونیوز کے مطابق کوٹلی آزاد کشمیر یونیورسٹی کے شعبہ ایجوکیشن نے ایک سرکلر جاری کیا ہے جس میں طالبات کے سرخی لگانے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے سرکلر میں کہا گیا ہے کہ ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کی طالبات لپ اسٹک نہ لگائیں اور لپ اسٹک لگانے پر طالبات پر100روپے جرمانہ ہوگا۔ یونیورسٹی آف کوٹلی کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ یہ سرکلر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے جاری کیا ہے لہٰذا پوری یونیورسٹی پر اس کا اطلاق نہیں ہوگا دیگر شعبوں کی طالبات اس پابندی سے مستثنیٰ ہوں گی۔خیال رہے کہ اس سے قبل فیصل آباد کے پنجاب میڈیکل کالج میں تمام طلبا وطالبات کے لئے جینز پہننے پر پابندی عائد کرتے ہوئے انہیں ایک یونیفارم پہننے کانوٹس جاری کیا گیا تھا جس کے مطابق کسی بھی طالب علم کو کالج میں جینز پہننے کی اجازت نہیں ہو گی۔بتایا گیا کہ طالبات سفید شلوارقیمض،عنابی رنگ کا ڈپٹہ اور کالے جوتے پہن کر آئیں گی جبکہ طلباء سفید شرٹ کے ساتھ سلورگرے پینٹ یا سفید شلوار قمیض پہن کر آئیں گے۔ نوٹس کے مطابق تمام طالبعلم 3 فروری سے یونیفارم میں آئیں گے۔جب کہ 2 سال پہلے پنجاب حکومت کی جانب سے بھی ایک نوٹس جاری کیا گیا تھاجس میں پنجاب بھر کے تعلیمی اداروں میں جینز پہننے پر پابندی لگائی گئی تھی لیکن بعد میں اس فیصلے کو واپس لے لیا گیا تھا۔ایک ایسا ہی واقع دسمبر2018 میں بھی پیش آیا تھا جب کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج کی جانب سے بھی جینر پہننے پر پا بندی عائد کی گئی تھی۔ پنجاب میں ایسے نوٹس پہلے بھی جاری کئے جا چکے ہیں جن کے مطابق تعلیمی اداروں میں جینر پہننے پر پابندی عائد کی گئی تھی لیکن اکثر دیکھنے میںآ یا ہے کہ یونیورسٹیوں اور کالجوں میں اس کی پیروی زیادہ دیر تک نہیں کی جاتی اور قانون کو ختم کر دیا جاتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں