بریکنگ نیوز : یا اللہ خیر۔۔۔ پولیس چیک پوسٹ پر دہشت گردوں کا حملہ، تشویشناک اطلاعات موصول

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) ڈیرہ اسماعیل خان میں پولیس چیک پوسٹ پر دہشت گردوں نے حملہ کر دیا، پولیس کی جوابی فائرنگ سے حملہ آورفرار ہو گئے۔ ذرائع کے مطابق دہشت گردوں نے ڈیرہ اسماعیل خان میں تھانہ ٹاؤن کی پولیس چیک پوسٹ پر فائرنگ کی، راکٹ داغے اور ہینڈ گرنیڈز کے ساتھ حملہ کیا۔پولیس کے مطابق 5سے 6 حملہ آور موٹر سائیکلوں پر سوار تھے جنہوں نے چیک پوسٹ پر 3 راکٹ فائر کیے اور 5 ہینڈ گرینڈ پھینکے جس میں سے تین ہینڈ گرینڈ پھٹے جبکہ دو نہ پھٹ سکے ۔ اس موقع پربم ڈسپوزل اسکواڈ کے انچارج عنایت اللہ ٹائیگر نے 2 دستی بم اور راکٹ کو ناکارہ بنا دیا۔ پولیس کی جانب سے علاقے میں سرچ آپریشن جاری ہے اس دوران دہشت گردوں کی طرف سے 5 کلو وزنی ریمورٹ آئی ای ڈی کو بھی ناکارہ بنادیا گیا، حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ دہشتگردوں کی جانب سے پولیس چوکی پر 4سے راکٹ لانچر سے فائر کئے گئے۔ تاہم پولیس نے دہشتگردوں کیخلاف جوابی کارروائی کی اور فائرنگ شرو ع کردی گئی۔ تاہم حملہ کے بعددہتشت گرد فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ واقعے کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ دہشتگردوں کے حملے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ تاہم واضح رہے پاکستان میں دہشتگردی کیخلاف بھرپور کارروائی کے بعد دہشتگردی نہ ہونے کے برابر ہے۔ تاہم ایک بار پھر دہشتگردوں کی جانب سے پولیس چوکی پر حملہ کرکے قبضہ کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ یہ بات بھی قابل غور رہے کراچی سے کالعدم تنظیم کے 2 انتہائی مطلوب دہشتگرد گرفتار کر لیا تھا ، ملزم سی ٹی ڈی کی جاری کردہ لسٹ میں مطلوب ترین ہشتگرد، ملزم پر 30 لاکھ کا انعام مقرر تھا۔ سندھ رینجرز نے انٹیلی جنس کی رپورٹ پر سی ٹی ڈی کے ہمراہ کراچی کے علاقے اورنگی ٹاؤن میں کاروائی کی۔ ترجمان سندھ رینجرز کاکہنا ہے کہ کالعدم تنظیم کے دو انتہائی مطلوب ترین دہشتگرد منصور احمد اور فضل غنی کو گرفتار کر لیا گیا تھا ، ملزم سی ٹی ڈی کی جاری کردہ لسٹ میں مطلوب دہشتگرد ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں